اغوا کی وارداتوں میں ٖگیر معمولی اضافہ 9 ماہ میں 1860 افراد اغوا ہوئے

اغوا کی وارداتوں میں ٖگیر معمولی اضافہ 9 ماہ میں 1860 افراد اغوا ہوئے

  

 لا ہور (شعیب بھٹی )صو با ئی دا ر الحکومت میں اغوا کی وارداتوں میں غیرمعمولی اضافہ ہو گیا۔ شہر میں روزانہ اوسطاً سات افراد اغوا ہونے لگے۔ گزشتہ 9ماہ کے دوران 208 بچوں سمیت ایک ہزار آٹھ سو ساٹھ افراد اغوا ہوئے، وزیر اعلی ٰ پنجا ب میا ں شہبا زشر یف نے آ ئی جی پنجا ب سے ر پو رٹ طلب کر لی ۔تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت کے وزراء اور پولیس کی افسرشاہی کے باوجود لاہورصوبے کا سب سے غیرمحفوظ شہر بن گیا۔ گزشتہ آٹھ ماہ کے دوران شہر میں دو سو آٹھ بچے اور ایک ہزار چھے سو چونتیس بڑے اغوا ہوئے۔ اغوا کی وارداتوں میں گزشتہ سال کی نسبت کہیں زیادہ اضافہ ہوا ہے۔گزشتہ سال ایک سو چھپن بچے اور ایک ہزار چار سو چھیانوے بڑے اغوا ہوئے۔ رواں سال کے دوران لاہور میں پولیس کی چھ انتظامی ڈویژنوں میں کینٹ ڈویژن پہلے نمبر پر رہا جہاں انسٹھ بچے اغوا ہوئے۔دوسرے نمبر پر باون بچے سٹی ڈویژن جبکہ تیسرے نمبر پراکتیس بچے ماڈل ٹاوٗن ڈوژن سے ، چوتھے نمبر پر تیس بچے صدر ڈویژن سے، پانچویں نمبر پرانیس بچے اقبال ٹاوٗن ڈویژن سے اورچھٹے نمبر پرسترہ بچے سول لائن ڈویژن سے اغوا ہوئے۔اسی طرح بچوں کے علاوہ بڑوں کے اغوا میں بھی پہلا نمبر کینٹ ڈویژن کا ہی ہے جہاں گزشتہ9 ماہ کے دوران چار سو نو افراد اغوا ہوئے۔ دوسرے نمبر پر سٹی ڈویژن میں تین سو سولہ افراد اغوا ہوئے۔تیسرے نمبرپر صدر ڈویژن سے تین سو باون افراد اغوا ہوئے۔ چوتھے نمبر پر ماڈل ٹاوٗن ڈویژن سے دو سو اکاون افراد، پانچویں نمبر پر دو سو ایک افراد اقبال ٹاوٗن ڈویژن سے اور چھٹے نمبر پرسول لائن ڈویژن سے ایک سو تیس افراد اغوا ہوئے۔

مزید :

علاقائی -