شہباز کے بھائی کی مدعیت میں مخالف فاروق اعظم کے بیٹے کیخلاف ایک اورمقدمہ درج

شہباز کے بھائی کی مدعیت میں مخالف فاروق اعظم کے بیٹے کیخلاف ایک اورمقدمہ درج

  

ملتان(وقائع نگار)پولیس تھانہ صدر نے خود پر پیٹرول چھڑک کر آگ لگانے والے شہباز کے بھائی کی مدعیت میں مخالف فریق (بقیہ نمبر16صفحہ11پر )

فاروق اعظم کے بیٹے کے خلاف ایک اور مقدمہ درج کر لیا ہے پولیس ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ شہباز کے بھائی شہزاد نے پولیس کو درخواست دی تھی کہ 16اکتوبر کو دن 11بجے میں اپنے بھائی کے مقدمہ کے سلسلہ میں کاغذات لے کر گھر آ رہا تھا کہ راستہ میں موضع چاہ آڑی والا میں فاروق اعظم کے گھر کے سامنے تین نا معلوم افراد نے مجھے روکا جو کہ نقاب پوش تھے انہوں نے مجھے دبوچ لیا اور تشدد کا نشانہ بنایا دوران مزاحمت ایک شخص کے منہ سے نقاب اتر گیا جو فاروق اعظم کا بیٹا تھا جس کے ہاتھ میں پسٹل اور دیگر دو نامعلوم کے ہاتھ میں سوٹے اور اور پیٹرول سے بھرا کین تھا مجھے مارتے مارتے نیچے گرا دیا اور فاروق اعظم کے بیٹے نے کہا کہ میرے والد نے کہا ہے کہ تمہیں خود کشی کرنے کا شوق ہے لہذا آج ہم تمھیں زندہ جلا دیتے ہیں اس دوران اس نے میرے سر پر پسٹل مارا اور دو افراد نے مجھے ڈنڈے سوٹے مارے اور ایک شخص نے مجھ پر پیٹرول چھڑکا اور فاروق اعظم کے بیٹے نے اپنی جیب سے لائٹر نکالا اورکہا کہ آج ہم تمھیں زندہ جلا دیں گے اسی دوران گواہان آگئے جنہیں دیکھ کر وہ موقع سے فرار ہو گئے مذکورہ ملزمان نے دوران مزاحمت میری نئی موٹر سائیکل کو بھی تباہ کر دیا اس درخواست پر پولیس نے فوجداری قانون کے تحت مقدمہ درج کر دیا ۔

مقدمہ درج

مزید :

ملتان صفحہ آخر -