ریپ سے متعلق سوال پر بھارتی رہنماءکے جواب نے نیا تنازع کھڑا کردیا

ریپ سے متعلق سوال پر بھارتی رہنماءکے جواب نے نیا تنازع کھڑا کردیا
ریپ سے متعلق سوال پر بھارتی رہنماءکے جواب نے نیا تنازع کھڑا کردیا

  


نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں آئے روز ریپ کے نئے نئے واقعات رپورٹ ہوتے ہیں اور اس ضمن میں ایک خاتون رپورٹر نے ریاست کرناٹک کے سابق نائب وزیراعلیٰ ایس ایشورپا سے پوچھ لیا جس پر موصوف نے ایسا جواب دیاکہ نیاتنازع کھڑاہوگیا۔

بی بی سی کے مطابق ایک خاتون رپورٹر نے ان سے سوال کیا کہ حزب اختلاف کی جماعت کے طور پر آپ ریپ کے واقعات کے بارے میں کیا کر رہے ہیں؟جس پر بی جے پی کے رہنماءنے کہاکہ ”آپ ایک خاتون ہیں، اگر آپ کو کوئی کھینچ کر لے جائے اور ریپ کر دے اور ہم لوگ اپوزیشن والے کسی دوسری جگہ پر بیٹھے ہوں تو ہم لوگ کیا کر سکتے ہیں۔‘

اس بیان کے بعد کرناٹک کی اسمبلی نے بھی مذمت کی ہے اور ریاست کے سابق وزیر اعلی نے اسے ’انتہائی غیر ذمہ دارانہ‘ قرار دیالیکن بے جے پی کے رہنما نے اپنے اس بیان پرڈھٹائی کا مظاہرہ کرتے ہوئے کہاکہ کوئی غلط بات نہیں کی ،وہ اپوزیشن کے کردار کے بارے میں جاننا چاہتی تھیں اور میں نے ایک مثال دی،پتہ نہیں کیوں ایک ٹی وی چینل افواہیں پھیلا رہا ہے،خواتین سے متعلق ہماری پارٹی کا رخ بالکل واضح ہے، اپنے بیان سے متعلق افسوس ظاہر کرنے والا نہیں ہوں۔

مزید : بین الاقوامی