شام کے یہ خوبصورت ترین تاریخی مقامات جنگ کے بعد اب کس حالت میں ہیں؟ دیکھ کر آپ کا دل خون کے آنسو روئے گا

شام کے یہ خوبصورت ترین تاریخی مقامات جنگ کے بعد اب کس حالت میں ہیں؟ دیکھ کر آپ ...
شام کے یہ خوبصورت ترین تاریخی مقامات جنگ کے بعد اب کس حالت میں ہیں؟ دیکھ کر آپ کا دل خون کے آنسو روئے گا

  

دمشق(نیوزڈیسک) شام اس وقت خانہ جنگی کا شکار ہے اور ماضی کا ایک خوبصورت ملک کھنڈر بن چکا ہے۔یہ تباہی اس قدر ہولناک ہے کہ دیکھ کر آپ کا دل بھی خون کے آنسو روئے گا۔شام کا مشہور شہر ”الیپو“اس وقت مکمل کھنڈر میں تبدیل ہوچکا ہے جس کی وجہ اتحادی افواج کی جانب سے کی جانے والی بمباری ہے جبکہ شامی افواج اور باغیوں نے بھی ایسے اقدامات کئے ہیں جس کی وجہ سے شہر کی ایسی حالت ہوچکی ہے کہ دیکھ کر انسان کا رونا نکل جاتا ہے۔ایک مقام جہاں کبھی جیمنیزیم ہوتا تھا وہاں اب صرف راکھ کا ڈھیر نظر آتا ہے۔الیپومیں پیداہونے والے ریسٹورنٹ کے مالک کارلو اوہانین کا کہنا ہے کہ اس نے کبھی بھی نہیں سوچا تھا کہ اس کا شہر ایسا ہوجائے گا۔اس نے اپنے شہر کے بارے میں دنیا کو بتانے کی ٹھانی اور 2012ءسے شروع ہونے والی خانہ جنگی کے بعد اور پہلے کی تصاویر دنیا کو دکھائیں۔اس کا کہنا ہے کہ پرانی تصاویر میں آپ دیکھ سکتے ہیں کہ ہمارا شہر کس قدر بھلا لگتا تھا ،ہمارے بازار آباد تھے اور لوگ زندہ دلی سے جی رہے تھے لیکن اب سب ختم ہوچکا ہے اور پہلی نظر میں انسان کو یقین ہی نہیں آتا کہ یہ وہی شہر ہے جہاں سیاحوں کا تانتا بندھا رہتا تھا۔”اس شہرمیں صدیوں کی تاریخ موجود تھی لیکن صرف چار سال میں ہی سب کچھ ختم ہوچکا ہے۔شام میں آنے والے سیاحوں کے لئے سب سے دلچسپ شہر الیپو تھا لیکن اب یہاں کھنڈرات کے علاوہ کچھ بھی نہیں۔یہ شہر مستقبل میں دوبارہ آباد ہوجائے گالیکن جو تاریخی مقامات ختم ہوگئے انہیں واپس نہیں لایاجاسکتا۔“

زیر نظر تصاویر میں آپ دیکھ سکتے ہیں کہ ماضی کا ایک جیتا جاگتا شہر ایک قبرستان کا نقشہ پیش کررہا ہے۔

اس تصویر میں دیکھا جاسکتا ہے کہ شام کا قدیم بازار جو چند سال قبل لوگوں سے بھرا ہوتا تھا اب ایسا نظر آتا ہے کہ لگتا ہے کہ صدیوں سے یہاں کسی نے قدم ہی نہیں رکھا۔

ماضی کی اس تصویر میں آپ دیکھ سکتے ہیں کہ ایک جوڑا چلتا ہوا جارہا ہے لیکن نیچے والی تصویر کو دیکھیں تو ایسا لگتا ہے کہ یہ دوسری جنگ عظیم کے بعد کا کوئی یورپی شہر ہے۔

اس تصویر میں آپ تاریخی قلعہ پر شامی پرچم لہراتا ہوئے دیکھ رہے ہیں لیکن بمباری کے بعد یہ قلعہ کھنڈر بن چکا ہے اور پہلی نظر میں دیکھنے سے یہ یقین ہی نہیں آتا کہ یہ کوئی قلعہ ہے۔

کارلٹن سیٹاڈیل ہوٹل کا ایک پرانا منظر۔اس ہوٹل میں سیاحوں کی بڑی تعداد آکر رکتی تھی لیکن اب یہ ہوٹل مکمل طور پر تباہ ہوچکا ہے اور یہاں صرف ملبہ ہی نظر آتا ہے۔

یہ ہوٹل کا اندرونی منظر ہے جس میں سوئمنگ پول انتہائی خوبصورت لگ رہا ہے لیکن مئی 2014میں اسلامک فرنٹ کی جانب سے کئے جانے والے دھماکے نے اسے مکمل طور پر تباہ کردیا۔اب سوئمنگ پول تو نظر آتا ہے لیکن اس میں صرف ملبہ پڑا ہواملتا ہے۔

اس جیمنیزیم میں آپ کو بچے کھیلتے ہوئے نظر آرہے ہیں لیکن اب یہاں بھی تباہ شدہ عمارت کی باقیات موجود ہیں۔

اس تصویر میں لوگ شام کا کھانا انجوائے کررہے ہیں لیکن اب یہاں بھی ایسی صورتحال ہے کہ دیکھ کر انسان کا دل دہل جائے۔

اس تصویر میں آپ ’الیپو‘کے باہر کا منظر دیکھ رہے ہیں جو کہ کبھی انتہائی خوبصورت تھا لیکن اب یہاں صرف بمباری اور دھماکوں کے آثار نمایا ںہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -