جوڈیشل کمشن نے لاہو ر ہائیکورٹ کے ایڈیشنل ججوں کو مستقل کرنے کی سفارش کر دی

جوڈیشل کمشن نے لاہو ر ہائیکورٹ کے ایڈیشنل ججوں کو مستقل کرنے کی سفارش کر دی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(نامہ نگار خصوصی )جوڈیشل کمشن نے لاہور ہائی کورٹ کے 4ایڈیشنل ججوں کو مستقل کرنے کی سفارش کردی جبکہ لاہور ہائی کورٹ میں 14نئے ججوں کے تقرر کا معاملہ 3نومبر تک موخر کردیا ہے ۔چیف جسٹس پاکستان مسٹر جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی میں ہونے والے جوڈیشل کمشن کے اجلاس میں عدالت عالیہ کے جن ججوں کو مستقل کرنے کی سفارش کی گئی ہے ان میں مسٹر جسٹس خالد محمود ملک ،مسٹر جسٹس چودھری مشتاق احمد ،مسٹر جسٹس مسعود عابد نقوی اور مسٹر جسٹس چودھری محمد اقبال شامل ہیں ،انہیں 7نومبر 2014ء کو لاہور ہائی کورٹ میں ایڈیشنل ججز کے طور پر تعینات کیا گیا تھا ،جوڈیشل کمشن نے اپنی سفارشات پارلیمانی کمیٹی کو بھجوا دی ہیں ۔لاہور ہائی کورٹ میں نئے ججوں کے تقرر کا معاملہ بھی جوڈیشل کمشن کے اجلاس کے ایجنڈہ پر تھاتاہم جوڈیشل کمشن کے دو ارکان مسٹر جسٹس امیر ہانی مسلم اور مسٹر جسٹس آصف سعید کھوسہ کی عدم دستیابی کے باعث یہ معاملہ 3نومبر تک موخر کردیا گیا ۔ اجلاس میں چیف جسٹس پاکستان انور ظہیرجمالی سمیت تمام ممبران ججز اور یاسین آزاد ممبر پاکستان بار کونسل ، جاوید ہاشمی ممبر پنجاب بارکونسل نے ججز تقرر کیلئے چیف جسٹس لاہورہائیکورٹ کی جانب سے اختیار کردہ شفاف طریقہ کار کوسراہا۔اجلاس میں ججز تقرر کے لیے مزید نام بھجوانے پر اتفاق کیا گیا۔جوڈیشل کمیشن کا آئندہ اجلاس 3 نومبر کو ہوگا جس میں موجودہ فہرست کے ساتھ مزید ناموں پر بھی غور کیا جائے گا۔

مزید :

صفحہ اول -