خالد لطیف کیخلاف تفصیلی فیصلہ کی کاپی فریقین کو فراہم کر دی گئی

خالد لطیف کیخلاف تفصیلی فیصلہ کی کاپی فریقین کو فراہم کر دی گئی
 خالد لطیف کیخلاف تفصیلی فیصلہ کی کاپی فریقین کو فراہم کر دی گئی

  


لاہور(سپورٹس رپورٹر)پاکستان کرکٹ بورڈ کے اینٹی کرپشن ٹریبیونل نے اسپاٹ فکسنگ کیس میں سزا پانے والے کرکٹر خالد لطیف کیس کے فیصلے کی تفصیلی کاپی پی سی بی اور اوپنر نے وکیل کو فراہم کر دی ہے۔ فریقین 14 روز کے اندر اپیل کرنے کا حق رکھتے ہیں۔ تفصیلی فیصلے میں بتایا گیا ہے کہ کرکٹر پر پی سی بی کے کوڈ آف کنڈکٹ کی 6 شقوں کی خلاف ورزی کا الزام عائد تھا اور انہیں تمام الزامات میں قصور وار ٹھہراتے ہوئے 5 سالہ معطلی کی سزا سنائی گئی جبکہ 10 لاکھ روپے جرمانہ بھی عائد کیا گیا۔ ٹریبیونل کی کارروائی کے بار بار بائیکاٹ اور ساتھی کھلاڑیوں کو اکسانے کے اضافی الزام کی وجہ سے انہیں شرجیل خان سے زیادہ سزا دی گئی۔ تفصیلی فیصلے کی کاپی جاری ہونے کے بعد اب فریقین کو 14 روز کے اندر اپیل کرنے کا حق حاصل ہو گا۔ پی سی بی کرکٹر کو کم سزا دیئے جانے جبکہ خالد لطیف فیصلے کے خلاف اپیل کا اعلان کر چکے ہیں۔دوسری جانب اسپاٹ فکسنگ کے الزامات میں معطل کرکٹر شاہ زیب حسن کیس کی روزانہ کی بنیادوں پر سماعت اینٹی کرپشن ٹریبیونل میں جاری ہے۔ کرکٹر کے وکیل کاشف رجوانہ نے پی سی بی کے گواہوں سے سوالات کیے۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی


loading...