صومالیہ میں ٹرک بم حملہ،ہلاکتیں 300ہوگئیں، عالمی برادری کی مذمت

صومالیہ میں ٹرک بم حملہ،ہلاکتیں 300ہوگئیں، عالمی برادری کی مذمت

موغادیشو(این این آئی)صومالی دارالحکومت موغادیشو میں ٹرک بم حملے کے بعد تباہ ہونے والی عمارتوں کا ملبہ ہٹانے کا سلسلہ جاری ہے، ملبے میں سے مسلسل انسانی لاشیں نکل رہی ہیں۔ ہلاکتیں تین سو تک پہنچ گئی ہیں۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق افریقی ملک صومالیہ کے وزیر اطلاعات عبدالرحمٰن یاریسو نے بتایا کہ ٹرک بم حملے میں ہلاکتوں کی تعداد بڑھ کر 300 تک پہنچ گئی ہے اور اس تعداد میں مزید اضافے کا خدشہ ظاہر کیا ہے۔ تباہ شدہ عمارتوں کا ملبہ ہٹانے کا سلسلے بدستور جاری ہے۔ وزیر کے مطابق اس حملے میں 300 سے زائد افراد زخمی بھی ہیں۔دوسری جانب امریکا، برطانیہ، کینیڈا اور فرانس کے لیڈروں نے اس حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔ امریکی وزارت خارجہ نے کہا کہ واشنگٹن حکومت انسداد دہشت گردی کے لیے صومالی حکومت اور عوام کے ساتھ کھڑی ہے۔ اس بیان میں کہا گیا کہ امریکا اور اْس کے حلیف انسدادِ دہشت گردی کے خلاف کوششیں جاری رکھیں گے تا کہ امن و استحکام حاصل ہو سکے۔فرانسیسی صدر ایمانویل ماکروں نے صومالیہ کے ساتھ اظہار یک جہتی کیا ہے۔ انہوں نے افریقی یونین کی طرف سے دہشت گرد گروہوں کے خلاف جاری کارروائیوں کی حمایت جاری رکھنے کا عزم بھی ظاہر کیا ہے۔ افریقی یونین کمیشن کے چیرمین موسٰی فکی محمد نے صومالی حکومت کو کہا ہے کہ وہ اس نازک وقت میں اتحاد و اتفاق کا مظاہرہ کرتے ہوئے معاشرتی تقسیم پر قابو پائے۔

مزید : عالمی منظر


loading...