وکیل کی آنکھ ضائع ہونے کے ذمہ دار ڈاکٹر کیخلاف کارروائی نہ ہونے پر ہیلتھ حکام سے 30 نومبر کو جواب طلب

وکیل کی آنکھ ضائع ہونے کے ذمہ دار ڈاکٹر کیخلاف کارروائی نہ ہونے پر ہیلتھ ...

ملتان (خبر نگار خصوصی) لا ہور ہائیکورٹ ملتان بینچ نے وکیل کی آنکھ ضائع ہونے کے ذمہ دارڈاکٹر کے خلاف کارروائی نہ ہونے پر(بقیہ نمبر39صفحہ12پر )

محکمہ صحت حکام سے 30 نومبرکوجواب طلب کرلیاہے۔فاضل عدالت میں ملتان کے راجہ گل شاہدحسن نے درخواست دائر کی تھی کہ اس نے خانیوال روڈپر واقع پرائیویٹ کلینک سے 2 فروری 2015 ء کوبائیں آنکھ کاآپریشن کرایاجودرست نہیں ہوسکا اور مذکورہ ڈاکٹرنے آپریشن کی ناکامی کااعتراف کرکے 6 ماہ تک علاج جاری رکھالیکن بینائی نہیں آسکی جس پر نیودہلی بھارت سے آپریشن کرایا جس سے بینائی واپس آئی جس پر سیکرٹری محکمہ صحت پنجاب اوردیگر حکام کو درخواستیں دیں کہ مذکورہ ڈاکٹر انسانی اعضاء کی پیوندکاری کے قانون سال 2010 ء کے مطلوبہ قابلیت اورڈگری نہیں رکھتاہے اورعوام کی صحت سے کھیل رہاہے لیکن اس کے خلاف آج تک کوئی کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...