2 سال کے دوران روپے کی گردش میں اوسط 25 فیصد اضافہ ریکارڈ

2 سال کے دوران روپے کی گردش میں اوسط 25 فیصد اضافہ ریکارڈ

ملتان(نیوز رپورٹر) سٹیٹ بنک آف پاکستان کیمطابق ودہولڈنگ ٹیکس کے نفاذ کے اثرات نمایاں ہونے لگے ہیں دو سال کے دوران روپے کی گردش میں اوسط 25 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے بنک ٹرانزیکش پر ودہولڈنگ ٹیکس کے نفاذ نے عوام کو بنکوں کے لین دین سے دور کر دیا ہے اور بنک کھاتوں میں رقوم رکھنے کے رحجان میں بھی کمی واقع ہوئی گذشتہ دو سال کے دوران روپے کی گردش میں اوسط 25 فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے جبکہ اس سے قبل گذشتہ گیارہ برسوں میں روپے کی گردش اوسط 14 فیصد تھی مرکزی بنک کیمطابق جون 2017 تک 4200 ارب روپے گردش کررہے تھے حکومت نے پہلے 25 ہزار کی کیش بنکنگ ٹرانزیکشن پر 0.6 فیصد ٹیکس عائد کیا تھا پھر اسے 50 ہزار کی ٹرانزیکشن پر 0.3 فیصد کر دیا گیا تھا تاہم بعد ازاں اس میں تبدیلی کرتے ہوئے حکومت نے ٹیکس پیئرز کو فائدہ پہنچانے کیلئے ودہولڈنگ ٹیکس کی شرح نان فائلر کیلئے 0.4 فیصد اور فائلر کیلئے ٹیکس کی شرح 0.3 فیصد کر دی گئی۔

گردش

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...