صومالیہ میں 300مسلمانوں کو شہید کرنے والا خود کش بمبار کون تھا اور امریکہ سے اس کا کیا تعلق تھا؟ جان کر ہر مسلمان کا رنگ اُڑ جائے کیونکہ۔۔۔

صومالیہ میں 300مسلمانوں کو شہید کرنے والا خود کش بمبار کون تھا اور امریکہ سے ...
صومالیہ میں 300مسلمانوں کو شہید کرنے والا خود کش بمبار کون تھا اور امریکہ سے اس کا کیا تعلق تھا؟ جان کر ہر مسلمان کا رنگ اُڑ جائے کیونکہ۔۔۔

  


موغادیشو(مانیٹرنگ ڈیسک) چند روز قبل صومالیہ کے دارالحکومت موغادیشو میں ایک خودکش حملہ آور نے بارود سے بھرا ٹرک شہر کے مرکز میں دھماکے سے اڑا دیا جس سے 300سے زائد افراد کی موت واقع ہو گئی۔ اس واقعے کی تحقیقات میں حیران کن انکشاف سامنے آیا ہے کہ حملہ آور صومالی فوج میں ملازم رہ چکا تھا۔ دی گارڈین کی رپورٹ کے مطابق دو ماہ قبل صومالیہ کی فوج اور امریکہ کی سپیشل فورسز نے اس سابق فوجی کے آبائی قصبے میں ایک آپریشن کیا تھا اور 10عام شہریوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا تھا۔ ممکنہ طور پر اس نے یہ حملہ اس آپریشن اور اس میں ہونے والی ہلاکتوں کا انتقام لینے کے لیے کیا تھا۔

چین نے سعودی عرب کو 100 ارب ڈالر دینے کی پیشکش کردی، بدلے میں کیا چیز مانگی؟ جان کر ٹرمپ کے پسینے نکل جائیں گے

رپورٹ کے مطابق موغادیشو میں ہونے والی یہ واردات دنیا میں دہشت گردی کی سب سے بڑی واردات تھی جس میں اتنی زیادہ ہلاکتیں ہوئیں۔صومالیہ میں برسرپیکار شدت پسند گروپ الشباب کی طرف سے تاحال اس حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی گئی تاہم گروپ کے گرفتار کیے گئے ایک شدت پسند نے اعتراف کیا ہے کہ اس حملے میں الشباب ملوث ہے۔ تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ ”یہ حملہ امریکی فوج کی قیادت میں ہونے والے آپریشن کا ردعمل تھا جس میں 3بچے میں جاں بحق ہوئے جن کی عمریں 6سے 10سال کے درمیان تھیں۔“ رپورٹ کے مطابق قبائلیوں نے اس آپریشن کے بعد صومالی حکومت اور اس کے اتحادیوں سے ان ہلاکتوں کا انتقام لینے کا اعلان بھی کیا تھا۔

مزید : بین الاقوامی


loading...