مچھر مار سپرے کا سلسلہ بند، ہسپتالوں میں ڈینگی بخار کاؤنٹرز کے عملہ میں کمی کا انکشاف

مچھر مار سپرے کا سلسلہ بند، ہسپتالوں میں ڈینگی بخار کاؤنٹرز کے عملہ میں کمی ...

  

لاہور(جاوید اقبال) صوبائی دارالحکومت میں ڈینگی لاروا کی برآمدگی کے باوجود مچھر مار سپرے کا سلسلہ روکنے اورہسپتالوں میں ڈینگی بخار کاؤنٹرز سے80فیصد عملہ کی تعدادمیں کمی کئے جانے کا انکشاف۔تفصیلات کے مطابق شہرمیں ڈینگی بخار کے تصدیق شدہ مریضوں کی تعداد400سو سے بڑھ چکی ہے جبکہ مشتبہ مریضوں کی تعداد10ہزار سے زائد ہے اور اس میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے جبکہ سرویلنس مہم میں بھی کم کر دی گئی۔ذرائع کے مطابق 9زونوں کی ٹیموں کو مچھر مار ادویات کے سپرے سے روک دیا گیا جبکہ ایس او پیز کے مطابق جہاں سے ڈینگی لاروے برآمد ہوں وہاں سپرے ضروری ہے۔ ذرائع کے مطابق مچھر مارنے کیلئے خریدی گئی دوائی بھی ناقص کوالٹی کی تھی۔ اس حوالے سے کمشنر لاہور آصف لودھی نے کہا کہ جس زون میں ایس او پیز پر عمل نہیں ہو رہا وہاں کے ڈپٹی ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسرز اور زونل افسروں کے خلاف کارروائی ہو گئی۔ وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا ہے کہ ہسپتالوں میں ڈینگی کاوینٹرز پر عملہ کی کمی کا نوٹس لیا جائے گا۔جس ہسپتال میں کوتاہی پائی گئی وہاں کے ایم ایس کیخلاف ایکشن ہو گا جبکہ چیف میٹروپولیٹن آفیسر علی بخاری کا کہنا ہے کہ گزشتہ سال خرید ی گئی ادویات کی کوالٹی کے بارے میں بھی تحقیقات کریں گے۔

 انکشاف

مزید :

صفحہ اول -