پاکستان کوفیٹف کی گرے سے نکال کر وائٹ لسٹ میں شامل کرنے کے قوی امکانات

 پاکستان کوفیٹف کی گرے سے نکال کر وائٹ لسٹ میں شامل کرنے کے قوی امکانات

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)ایف اے ٹی ایف کے پلانری اجلاس میں منی لانڈرنگ اور ٹیرر فنانسنگ کے حوالے سے قانون سازی اور بھر پورعزم کے باعث پاکستان کو گرے لسٹ سے نکال کر وائٹ لسٹ میں شامل کرنے کے قوی امکانات ہیں۔تفصیلات کے مطابق پیرس میں ایف اے ٹی ایف کا پلانری اجلاس 21 سے 23 اکتوبر کو ہوگا، ایف اے ٹی ایف کے سہہ روزہ اجلاس میں یہ فیصلہ ہو گا کہ پاکستان کو گرے لسٹ ہی میں رکھا جائے یا وائٹ لسٹ میں شامل کر لیا جائے یعنی پاکستان کو ایک ایسا ملک قرار دیدیا جائے جہاں منی لانڈرنگ اور دہشتگردی کی مالی معاونت نہیں ہوتی، بصورت دیگرایران اور شمالی کوریا کی طرح بلیک لسٹ میں شامل کر کے پاکستان پر سخت اقتصادی پابندیاں عائد کی جاسکتی ہیں۔ذرائع کے مطابق پاکستان پر بلیک لسٹ ہونے کے تمام خدشات ختم ہوسکتے ہیں، پاکستان نے آئی سی آرجی کے 150 سوالات کا مفصل جواب دیا، پاکستان نے 27 میں سے 21 اہداف پربڑی پیش رفت کی ہے اور نیکٹا، اسٹیٹ بینک،ایس ای سی پی،ایف ایم یو نے تمام اہداف پورے کئے۔

ایف اے ٹی ایف

مزید :

صفحہ اول -