جسے فوج میں ترقی نہیں ملی اسے ڈی جی نیب لگا دیا گیا، محمد صفدر

جسے فوج میں ترقی نہیں ملی اسے ڈی جی نیب لگا دیا گیا، محمد صفدر

  

لاہور(نامہ نگار)انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیپٹن (ر) محمد صفدر نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ جس کو فوج میں ترقی نہیں ملی اسے ڈی جی نیب لگا دیا گیا،ماضی میں چیئر مین نیب کے خاندان میں قتل غارت ہوئی تو پتا لگا ان کے بھائی کا دماغی توازن درست نہیں تو مجھے یقین ہے ان کابھی تھوڑا بہت خراب ہے انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ کل ہمارے قائد میاں نواز شریف کا خطاب تاریخی تھا  میں وکلاء کا مشکور ہوں کہ جس طرح وہ کیس کو لے کر چل رہے ہیں،میں مبارک بعد پیش کرتا ہوں مراد راس کو جو انہوں نے منشیات کا کیس ڈالا اب ان کواس بات کا جواب دینا ہوگا کہ 25کلو منشیات آئی کہاں سے کیسے ڈالی،سارا کام چھوڑ کر وکلا ہمارے لئے لڑ رہے ہیں،انہوں نے مزید کہا کہ 11اگست کو ہمارے اوپر قاتلانہ حملہ ہوا چیئر مین نیب کیخلاف ایف آئی درج کروانے گیا تو پولیس نے درج نہیں کی،چیئرمین نیب سے ہماری جان کو خطرہ ہے عدلیہ میں ایسا شخص داخل ہو گیا جس نے عدلیہ کو شرمندہ کر دیا ہے جاوید اقبال نے ہماری گاڑی پر فائر کروایا ہماری گاڑی پر پتھراؤ کروایا مجھے پشاور بلوایا اور جب کچھ نہیں ہوا تومجھ پر جھوٹی ایف آئی آر کروا دی،ایف آئی آر کروانے کے بعد سی سی پی او کو لے کر آئے جس کو عدالت نے کہا کہ وہ تو پروموشن کے بھی قابل نہیں ہیں سی سی پی اولاہورعمر شیخ بھی اپنی پروموشن کروانے کے چکر میں ذاتیات پر اترا ہوا ہے جاوید اقبال چہیتا ہے اسے نیب سے ریٹائرمنٹ کے بعد بلوچستان کا گورنر لگا دیا جائے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ آگے کا پلان بھی مولانا فضل رحمن ہی بتائیں گے پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا ہیں  تمام صوبوں میں جلسے کئے جائیں گے۔

محمد صفدر

مزید :

صفحہ آخر -