خانقاہ شریف میں آٹے کا بحران‘ لوگوں کی لمبی قطاریں‘ انتظامیہ گم 

خانقاہ شریف میں آٹے کا بحران‘ لوگوں کی لمبی قطاریں‘ انتظامیہ گم 

  

 خانقاہ شریف (نمائندہ پاکستان)   دوسرے شہروں کی طرح خانقاہ شریف میں بھی آٹے کاشدیدترین بحران ہے۔محکم فلور مل کی طرف سے دس کلوکے سوتھیلے آتے ہیں جن کا آٹا جانور بھی نہیں کھاتے وہ خواتین و مردقطاروں میں لگ کرلینے پر مجبور ہیں۔ خانقاہ شریف وگرد(بقیہ نمبر25صفحہ 6پر)

 نواح کی آبادی ستر ہزارہے۔اس وقت خانقاہ شریف میں چینی اور آٹے کابحران شدت اختیارکرگیاہے  چونکہ چینی اور آٹاضرورت کی اہم خوردنی اشیاء ہیں چند دنوں سے محکم فلورمل کے دس دس کلو کے ایک سوتھیلے شہاب پل پرفروخت ہونے آٹے جن کا آٹا اتناناقص ہے کہ جانوربھی نہیں کھاتے لیکن لوگ لمبی لمبی قطاروں میں لگ کرلینے پرمجبور ہیں وہ بھی بغیرشناختی کارڈ کے نہیں ملتاگذشتہ روز ایک خاتون چالیس منٹ قطار میں لگ کرسیلزمین تک پہنچی توشناختی کارڈ نہ ہونے پر سیلزمین نے آٹادینے سے انکاردیا۔ دکانوں پرخالص آٹا اسی سے سوروپے کلوفروخت کیا جارہاہے مگر انتظامیہ خاموش تماشائی بنی ہوئی،گذشتہ سال جب تحصیل صدر بہاولپور میں رابعہ سیال اسسٹنٹ کمیشنربہاولپور تھیں تو اسوقت بھی آٹے کا مصنوعی بحران ہواتھا لیکن انہوں نے مل مالکان اوردکانداروں کوبھاری جرمانے کر کے سیدھاکیا،آٹے اورچینی کے گوداموں پرچھاپے مارکرسٹاک اپنے قبضہ میں لے لیا تھا۔ پھر خانقاہ شریف میں آٹے کے ٹرک کھڑے تھے اورآٹالینے والہ کوئی نہیں تھا۔ اہل علاقہ نے کمشنربہاول پور اورڈپٹی کمشنربہا ولپورسے مطالبہ کیا ہے کہ ناقص آٹافروخت کرنے والے مل مالکان کے خلاف کاروائی کریں۔

آٹا بحران

مزید :

ملتان صفحہ آخر -