بچی سے بداخلاقی‘ 63 سالہ ”بابے“ کو عمر قید‘ 1 لاکھ جرمانے کی سزا 

  بچی سے بداخلاقی‘ 63 سالہ ”بابے“ کو عمر قید‘ 1 لاکھ جرمانے کی سزا 

  

ملتان (خصو صی رپورٹر)ماڈل کوٹ برائے صنفی تشدد ملتان کے جج حسن احمد نے سترہ سالہ لڑکی کو دوا پلا کر بے ہوش کرنے اور بداخلاقی کا نشانہ بنانے کے مقدمہ میں ملوث(بقیہ نمبر31صفحہ 6پر)

  63 سالہ مبینہ ڈاکٹر ملزم کو تمام گواہوں کے بیانات اور ثبوتوں کی روشنی میں عمر قید اور ایک لاکھ روپے جرمانہ ادا کرنے کی سزا کا حکم دیا ہے۔ پراسیکیوشن کی جانب سے پراسیکیوٹرز چوہدری ضیاء  الرحمن اور سید سلیم بہار نے دلائل پیش کیے۔ فاضل عدالت میں پولیس تھانہ سیتل ماڑی ملتان کے مطابق ملزم رب نواز ولد غلام محمد کے خلاف 17 سالہ (ث) نے 30 جولائی 2019 کو مقدمہ نمبر 856/19 درج کرایا تھا جس میں الزام عائد کیا گیا کہ ملزم جو کے پیشہ کے اعتبار سے ڈاکٹر ہے۔ متاثرہ ملزم کے پاس تیز بخار کی حالت میں چیک اپ کرانے کے لیے گئی تھی کہ ملزم ڈاکٹر نے اسے ایک کمرے میں لے جاکر ڈرپ لگا دی ڈرپ میں نشہ آور دوا ملائی جس سے وہ بے ہوش ہو گئی اس دوران ملزم نے اسے بداخلاقی کا نشانہ بنایا تاہم بے ہوشی کی حالت میں چیخ و پکار پر کمرے کے باہر موجود لڑکی کے ورثاء آگئے جنہوں نے ملزم کو برہنہ حالت میں بھاگتے ہوئے دیکھا تھا ان الزامات کے ساتھ مقدمہ درج کیا گیا ملزم کے خلاف گواہوں کے بیانات قلمبند اور پولیس کی جانب سے ٹھوس شواہد اکھٹے کئے گئے۔سماعت کے دوران تمام گواہوں اور ثبوتوں کو کافی قرار دیتے ہوئے عدالت نے ملزم کو قصور وار ٹھہراتے ہوئے عمر قید اور جرمانہ ادا کرنے کی سزا سنائی ہے جبکہ جرمانہ ادا نہ کرنے کی صورت میں ملزم کو مزید قید بھگتنا ہوگی۔ ملزم کو نشہ آور دوا پلانے کے جرم میں شک کا فائدہ دیتے ہوئے بری کیا گیا ہے۔

سزا

مزید :

ملتان صفحہ آخر -