میں آرزوئے دید کے کِس مرحلے میں ہوں| واصف علی واصف |

میں آرزوئے دید کے کِس مرحلے میں ہوں| واصف علی واصف |
میں آرزوئے دید کے کِس مرحلے میں ہوں| واصف علی واصف |

  

میں آرزوئے دید کے کِس مرحلے میں ہوں

خود آئینہ ہوں یا میں کسی آئینے میں ہوں

رہبر نے کیا فریب دیئے ہیں مجھے نہ پوچھ

منزل پہ ہوں نہ اب میں کسی راستے میں ہوں

اِس دم نہیں ہے فرق ، صبا و سموم میں

اِحساس کے لطیف سے اِک دائرے میں ہوں

میں کِس طرح بیاں کروں حرفِ مدعا

جِس مرحلے میں کل تھا اُسی مرحلے میں ہوں

واصف مجھے ازل سے ملی منزلِ ابد

ہر دور پر محیط ہوں جِس زاویے میں ہوں

واصف علی واصف 

Main   Aarzu-e-Deed   K   Kiss   Marhalay   Men   Hun

Khud   Aaina   Hun   Ya   Main   Kisi   Aainay   Men   Hun

 Rehbaar    Nay   Kaya   Fariab   Diyay    Hen   Mujhay    Na   Poochh

Manzil    Pe   Hun   Na   Ab  Main   Kisi   Raastay   Men   Hun

 Iss   Dam   Nahen   Hay   Farq   ,   Sabaa -o-Samoom   Men

Ehsaas   K   Lateef    Say   Ik   Daairay   Men   Hun

 Main   Kiss   Tarah   Bayaan   Karun   Harf-e-Mudaa

Jiss   Marhalay   Men   Kall   Tha   Usi   Marhalay   Men   Hun

WASIF   Mujhay   Azall   Say   Mili   Manzil-e-Abad

Har   Daor   Par    Muheet   Hun   Jiss    Zaawiay   Men   Hun

 Poet: Wasif   Ali   Wasif

 

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -