دل کے ویرانے کو یوں آباد کر لیتے ہیں ہم| وامق جونپوری |

دل کے ویرانے کو یوں آباد کر لیتے ہیں ہم| وامق جونپوری |
دل کے ویرانے کو یوں آباد کر لیتے ہیں ہم| وامق جونپوری |

  

دل کے ویرانے کو یوں آباد کر لیتے ہیں ہم

کر بھی کیا سکتے ہیں تجھ کو یاد کر لیتے ہیں ہم

جب بزرگوں کی دعائیں ہو گئیں بے کار سب

قرضِ خواب آور سے دل کو شاد کر لیتے ہیں ہم

کون سنتا ہے بھکاری کی صدائیں، اس لیے

کچھ ظریفانہ لطیفے یاد کر لیتے ہیں ہم

جب پرانا لہجہ کھو دیتا ہے اپنی تازگی

اک نئی طرزِ نوا ایجاد کر لیتے ہیں ہم

دیکھ کر اہلِ قلم کو کشتۂ آسودگی

خود کو وامق فرض اک نقاد کر لیتے ہیں ہم

شاعر: وامق جونپوری

 (شعری مجموعہ:سفرِ ناتمام؛سالِ اشاعت،1990 )

Dil   K   Weeraanay   Ko   Yun   Aabaad   Kar   Laitay   Hen   Ham

Kar   Bhi   Kaya    Saktay   Hen  Tujh   Ko   Yaad   Kar   Laitay   Hen   Ham

 Jab   Bazurgon   Ki   Duaaen   Ho   Gaen   Be  Kaar   Sab

Qarz-e-Khaab   Aawar   Say   Dil   Ko   Shaad   Kar   Laitay   Hen   Ham

Kon    Sunta   Hay   Bhikaari   Ki   Sadaaen   ,   Iss   Liay

Kucch   Zareefaana   Lateefay   Yaad   Kar   Laitay   Hen   Ham

 Jab   Puraana   Lehja   Khao   Daita   Hay   Apni   Taazgi

Ik   Nai Tarz-e-Nao   Ejaad   Kar   Laitay   Hen   Ham

 Daikh   Kar   Ehl-e-Qalam   Ko   Kushta-e-Aasoodgi

Khud   Ko   WAMIQ   Farz   Ik   Naqqaad   Kar   Laitay   Hen   Ham

 Poet: Wamiq   Jaunpuri

 

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -