پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں میں فوری کمی ناگزیر: صفدر علی بٹ

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں میں فوری کمی ناگزیر: صفدر علی بٹ

  

             لاہور(سٹی رپورٹر)پٹرولیم مصنوعات میں اضافہ پر گہری تشویش ظاہر کرتے ہوئیصدر لبرٹی مارکیٹ بورڈصفدر علی بٹ نے  حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ فوری طور پر قیمتوں پر نظر ثانی کرے۔پٹرول 137اور ڈیزل کی قیمت  134روپے اور مٹی کے تیل کی قیمت تقریبا 111روپے فی لیٹر ہو گئی ہے۔ پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں کا براہ راست اثر ٹرانسپورٹیشن لاگت پر آتا ہے۔کنسٹرکشن کا شعبہ متاثر ہو گا۔ ڈیزل کی قیمت بڑھنے سے کنسٹرکشن میٹریل کی لاگت میں اضافہ ہو جاتا ہے  جس سے تعمیراتی شعبہ متاثر ہو گا اور تجارتی سرگرمیوں میں کمی آئے گی۔ پیداواری لاگت میں کئی گنا اضافہ ہو گیا ہے۔ حالیہ اضافے سے مینوفیکچرنگ کا شعبہ متاثر ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ قیمتیں بڑھنے سے مہنگائی کا طوفان آئے گا۔  افراط زر بڑھنے سے قوت خرید میں کمی آئے گی جس سے معیشت سست روی کا شکار ہو گی۔کھانے پینے کی اشیاء  پہلے ہی عام آدمی کی پہنچ سے باہر ہیں۔موجودہ اضافے سے غربت میں مزید اضافہ ہو گا۔انہوں نے کہا کہ حکومت  مہنگائی کو کنٹرول کرنے کے لیے ہنگامی  اقدامات کرے۔ ٹیکس اور لیوی کی شرح کم کرے اور عوام کو ریلیف دے۔ ہمارا حکومت سے مطالبہ ہے کہ قیمتوں میں اضافہ واپس لیا جائے۔ تاکہ افراط زر میں کمی آئے۔انہوں نے مزید کہا کہ موجود ہ حالات میں تاجر برادری اور خصوصا عوام کازندگی گزارنامشکل ہو گیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ حکومت ٹیکسز کی شرح خصوصاً اشیائے خوردونوش پر عائد ٹیکسز کی شرح میں کمی کرے تاکہ مہنگائی کنٹرول میں آ سکے۔  خام مال کی امپورٹ پر ڈیوٹی کی شرح کم کی جائے۔ لگژری اشیاء کی درآمد پر پابندی عائد کی جائے تاکہ روپے پر دباو کم ہو۔ملک میں براہ راست سرمایاکاری بڑھانے کے لیے مراعاتی پیکیجز متعارف کرائے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ شرح سود میں مزید کمی کی جائے تاکہ سستے قرضوں کا حصول ممکن ہو۔ 

مزید :

کامرس -