حکومت تحقیقی مقاصد کیلئے وسائل کی کمی کو رکاوٹ نہیں بننے دیگی: کامران بنگش

      حکومت تحقیقی مقاصد کیلئے وسائل کی کمی کو رکاوٹ نہیں بننے دیگی: کامران ...

  

پشاور (سٹاف رپورٹر)وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کے معاون خصوصی برائے اعلیٰ تعلیم، آرکائیوز، لائبریریز اور اطلاعات و تعلقات عامہ کامران خان بنگش نے انجنئیرنگ یونیورسٹی پشاور میں قائم تحقیقی مرکز یو ایس پی کیس (سنٹر فار ایڈوانسڈ سٹڈیز ان انرجی) کا دورہ کیا اور مرکز میں نجی و سرکاری سطح پر توانائی کے ذرائع بڑھانے کیلئے اب تک ہونے والی تحقیق اور دریافت و ایجادات سے متعلق پیشرفت سے آگاہی حاصل کی یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار حسین، سنٹر کے سربراہ پروفیسر ڈاکٹر عدنان داؤد خان اور دیگر متعلقہ حکام بھی انکے ہمراہ تھے اس موقع پر کامران بنگش نے وہاں موجود ماہرین اور سائنسدانوں سے انکے تحقیقی موضوعات پر سیر حاصل گفتگو کی اور مختلف سوالات پوچھے انہوں نے یقین دلایا کہ صوبائی حکومت تحقیقی مقاصد کیلئے وسائل کی کمی کو رکاوٹ نہیں بننے دے گی اور تحقیقی اداروں بالخصوص جامعات کو فراخدلانہ فنڈز مہیا کئے جائیں گے تاہم حکومت بھی ان سے حسن کارکردگی کی توقع رکھنے میں حق بجانب ہے کامران بنگش نے کہا کہ آج نہ صرف پاکستان بلکہ دنیا بھر کو توانائی کے شدید بحران کا سامنا ہے تیل و گیس کے ذخائر میں مسلسل کمی آرہی ہے ایسے میں دستیاب ذخائر کے علاوہ توانائی کے متبادل ذرائع کی تلاش وقت کا تقاضا ہے جو پی ٹی آئی کے منشور اور ہماری وفاقی و صوبائی حکومت کی ترجیحات کا ترجیحاتی حصہ بھی ہے انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان اور وزیراعلیٰ محمود خان ماحول دوست توانائی کے ذرائع میں اضافے کیلئے واضح سوچ رکھتے ہیں اور اسکی روشنی میں اداروں کو گاہے بگاہے رہنما ہدایات بھی جاری کرتے رہتے ہیں اللہ تعالیٰ نے خیبرپختونخوا کو بے پناہ آبی و شمسی اور تیل و گیس کے ذخائر کے علاوہ متعدد قدرتی وسائل سے مالا مال کیا ہے ہمارے ماہرین اور سائنسدانوں کا فرض ہے کہ اس ضمن میں قومی توقعات پر پورا اتریں اور توانائی کے ایسے موثر ذرائع کو فروغ دیں جو عوام کے آئندہ عشروں کیلئے کافی و شافی ہوں انہوں نے واضح کیا کہ وہ جامعات کے تحقیقی شعبوں کے دورے اور انکی پیشرفت سے آگاہی حاصل کرتے رہیں گے۔

مزید :

صفحہ اول -