کیا واقعی شریف خاندان سے متعلق ڈاکیومینٹری نیٹ فلکس پر ریلیز کی جائے گی؟

کیا واقعی شریف خاندان سے متعلق ڈاکیومینٹری نیٹ فلکس پر ریلیز کی جائے گی؟
کیا واقعی شریف خاندان سے متعلق ڈاکیومینٹری نیٹ فلکس پر ریلیز کی جائے گی؟
سورس: Screen Grab

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان میں گزشتہ روز سے شریف خاندان سے متعلق بنائی گئی ایک ڈاکیومینٹری کا سوشل میڈیا پر خوب چرچا ہے جس میں شریف خاندان کی مبینہ کرپشن کو دکھایا گیا ہے۔ سوشل میڈیا صارفین کا دعویٰ ہے کہ یہ ڈاکیومینٹری آن لائن سٹریمنگ پلیٹ فارم نیٹ فلکس پر ریلیز کی جائے گی تاہم اب اس کی حقیقت سامنے آگئی ہے۔

جس ڈاکیومینٹری کے ٹریلر کی سوشل میڈیا پر بات کی جا رہی ہے اس کا نام ’بیہائنڈ دا کلوزڈ ڈورز‘(بند دروازوں کے پیچھے)  ہے ۔  ڈاکیومینٹری  ٹریلر میں غیرملکی ریسرچرز ، صحافیوں سمیت پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) سے منسلک افراد بشمول سابق وزیراعظم عمران خان کو دیکھا جا سکتا ہے۔ اس کے علاوہ پاکستانی اینکر پرسن ارشد شریف بھی اس کے ٹریلر میں شہباز شریف کے بچوں کی مبینہ کرپشن کے حوالے سے بات کرتے ہوئے نظر آ رہے ہیں۔

اگرچہ پاکستانی سوشل میڈیا پر یہ دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ یہ ڈاکیومینٹری نیٹ فلکس پر ریلیز ہوگی تاہم آن لائن سٹریمنگ پلیٹ فارم نے اس حوالے سے اپنے کسی سوشل میڈیا اکاؤنٹ پر کوئی اطلاع نہیں دی۔

ویب سائٹ اردو نیوز کے مطابق ڈاکیومینٹری کے ہدایتکار مائیکل اوسولڈ نے ’بیہائنڈ دا کلوزڈ ڈورز‘ کی نیٹ فلکس پر ریلیز ہونے کی اطلاعات کی تردید کرتے ہوئے کہا  ’ہم نے اب تک ڈاکیومینٹری کی ریلیز ہونے کے وقت یا یہ کس پلیٹ فارم پر ریلیز ہوگی اس کا اعلان نہیں کیا ہے، ’اس حوالے سے بات چیت جاری ہے اور اس وقت میں یہ تبصرہ نہیں کرسکتا کہ اسے کس پیلٹ فارم پر ریلیز کیا جائے گا۔‘ انہوں نے یہ بھی واضح کیا کہ انہوں نے یہ ڈاکیومینٹری کسی ادارے کے تعاون سے نہیں بلکہ آزادانہ طور پر بنائی ہے۔

مزید :

قومی -تفریح -سیاست -