اڑی حملہ:بھارت کے ریٹائرڈ فوجی افسر پاکستان سے فوری بدلہ لینے کے حامی، دفاعی تجزیہ نگاروں نے نتائج سے خبردار کر دیا

اڑی حملہ:بھارت کے ریٹائرڈ فوجی افسر پاکستان سے فوری بدلہ لینے کے حامی، دفاعی ...
اڑی حملہ:بھارت کے ریٹائرڈ فوجی افسر پاکستان سے فوری بدلہ لینے کے حامی، دفاعی تجزیہ نگاروں نے نتائج سے خبردار کر دیا

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) مقبوضہ کشمیر کے علاقے اڑی میں بھارتی فوجی ہیڈ کوارٹر پر حملے میں متعدد فوجیوں کی ہلاکت کے بعد بھارتی وزیراعظم مودی کی جانب سے اس واقعہ میں ملوث عناصر کو سزا دینے کے دعویٰ کے بعد بھارت کے آپشنز کے بارے میں چہ میگوئیاں کی جا رہی ہیں۔

بھارتی اخبار ” دی انڈین ٹائمز “ کے مطابق ان آپشنز میں ایک یہ ہے کہ پاکستان کے زیر انتظام کشمیر میں دہشتگردوں کے ٹھکانوں پر سرجیکل سٹرائیک کیا جائے۔دوسری طرف تجزیہ نگاروں نے اس آپشن کے بارے میں خبردار کیا ہے کہ اس صورت میں نتائج انتہائی خوفناک ہونگے۔تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ اس آپشن کے بارے میں انتہائی احتیاط کی ضرورت ہے۔اگرچہ اس بارے میں جموں و کشمیر میں بی جے پی کے رہنما رام مادیو نے کہا ہے کہ اب تحمل کی پالیسی کو ترک کر کے ” ایک دانت کے بدلے پورا جبڑا“ کی پالیسی پر عمل کیا جائے۔وزیر خزانہ ارون جیٹلی اور کچھ ریٹائرڈ فوجی جرنیلوں نے بھی اس واقعہ کا فوری جواب دینے کی حمایت کی ہے۔اس کیلئے آرمی ایکشن بھی کیا جا سکتا ہے۔ ایک ریٹائرڈ فوجی افسر نے کہا ہے کہ ہمیں فوجی آپشن کا استعمال کرنا چاہئے۔ جب تک پاکستان پر حملہ نہیں کیا جائے گا ایسے واقعات ہوتے رہیں گے۔اگر ہم اسی طرح خاموش رہے تو پاکستان ایسے واقعات کراتا رہے گا۔ایک ریٹائرڈ افسر نے الزام لگایا کہ کشمیر میں جو بھی مسائل ہیں ان کے پیچھے راولپنڈی میں موجود پاکستانی فوج کا ہیڈکوارٹر ہے۔ہمیں اس کا فوری جواب دینا چاہئے ۔ پاکستان کے ساتھ تجارت کو مکمل ختم کیا جائے۔اس بارے میں دنیا کو بھی بتانا ہوگا کہ ہم بہت سنجیدہ ہیں۔بھارت کے سابق آرمی چیف شنکر رائے چودھری اور بریگیڈیئر (ر) انیل گپتا نے بھی کہا ہے کہ پاکستان تمام صورتحال کا ذمہ دار ہے اور بھارت کو اس کا فوری جواب دینا چاہئے۔

مزید : بین الاقوامی