اسلام آباد میں پلاٹوں کی الاٹمنٹ پر پابندی

اسلام آباد میں پلاٹوں کی الاٹمنٹ پر پابندی
اسلام آباد میں پلاٹوں کی الاٹمنٹ پر پابندی

  


اسلام آباد(صباح نیوز)اسلام آباد ہائی کورٹ نے  وقاقی دارالخکومت میں پلاٹوں کی الاٹمنٹ پر پابندی لگا دی

۔اسلام آباد ہائی کورٹ  نے وفاقی ترقیاتی ادارہ(سی ڈی اے)کو آئندہ حکم نامے تک اسلام آباد میں  پلاٹوں کی الاٹمنٹ نہ کرنے  کے احکامات جاری کر دیے۔سنگڑیال  کے متاثرین کے وکیل عدنان حیدر رندھاوا  نے عدالت کو بتایا کہ سی ڈی اے نے لوگوں سے13سال قبل زمین لی سیکٹرز بنالیے لیکن متاثرین کو ابھی تک معاوضہ نہیں دیا۔وکیل نے عدالت کو بتایا کہ2008میں ایوارڈ بھی ہو چکا اور سی ڈی اے خود بھی اس کو مان رہا ہے لیکن پھر بھی عمل درآمد کرنے کے لیے تیار نہیں ہے۔وکیل عدنان حیدر رندھاوا نے عدالت کو بتایا کہ سی ڈی اے نے سنگڑیال کی زمین پر ڈی12اور ڈی13سیکٹرز بنائے لیکن متاثرین کو معاوضہ نہیں دیا۔اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ  نے حکم جاری کرتے ہوئے کہا کہ  سی ڈی اے بااثر لوگوں کو پلاٹ دے رہا لیکن متاثرین کے لیے ان کے پاس پیسے نہیں۔چیف جسٹس اطہر من اللہ  نے سی ڈی اے کو حکم دیا کہ وہ متاثرین کے حوالے سے معاملات دیکھے۔عدالت نے فریقین کو نوٹسزجاری کرتے ہوئے کیس کی سماعت مزید دوہفتے کے لیے ملتوی کردی۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد


loading...