”بہانے بہانے سے وزیراعظم کو بتاتا ہوں کہ ترقی یافتہ ممالک میں وزیر سائنس و ٹیکنالوجی ڈپٹی پرائم منسٹر ہو تا ہے اور اللہ کرے کہ۔۔“

”بہانے بہانے سے وزیراعظم کو بتاتا ہوں کہ ترقی یافتہ ممالک میں وزیر سائنس و ...
”بہانے بہانے سے وزیراعظم کو بتاتا ہوں کہ ترقی یافتہ ممالک میں وزیر سائنس و ٹیکنالوجی ڈپٹی پرائم منسٹر ہو تا ہے اور اللہ کرے کہ۔۔“

  


کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن) وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ ماضی میں سائنس و ٹیکنالوجی کے شعبے پر توجہ نہیں دی گئی، پاکستان کو مستقبل میں جدید ٹیکنالوجی سے استفادہ کرنا ہوگا۔پاکستان کے ساتھ آزاد ہونے والے ممالک سائنس کی وجہ سے آگے نکل گئے،جوملک ہمارے ساتھ آزاد ہوئے ان میں اورہم میں صرف ٹیکنالوجی کا فرق ہے،وفاقی وزیر نے کہا کہ بہانے بہانے سے وزیراعظم کوبتاتاہوں کہ ان ممالک میں سائنس وٹیکنالوجی کاوزیرتقریباًڈپٹی پرائم منسٹرہے،اللہ کرے وزیراعظم کا دھیان آجائے،ابھی تک تونہیں آیا،فوادچودھری کے مسکراتے ہوئے بیان پرتقریب میں تالیاں بج گئیں۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں دی فیوچر سمٹ کا آغاز ہوگیا، سمٹ میں گورنر سندھ عمران اسماعیل اور وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی فواد چودھری شریک ہوئے۔سمٹ سے خطاب کرتے ہوئے کہا فواد چوہدری نے کہا کہ سنہ 2022 میں پاکستان اپنا پہلا خلائی مشن بھیجے گا، ماضی میں سائنس و ٹیکنالوجی کے شعبے پر توجہ نہیں دی گئی۔فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ مستقبل میں آلو، ٹماٹر اور پیاز بیچ کر اپنا خسارہ پورا نہیں کر سکتے، پاکستان کو مستقبل میں جدید ٹیکنالوجی سے استفادہ کرنا ہوگا۔ پاکستان جنوبی ایشیا کا پہلا ملک تھا جس نے فائبر آپٹک بچھایا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان نے 1951 میں سائنس میں قدم رکھ دیا، پاکستان نے پانی سے متعلق 1963 میں ریسرچ شروع کی تھی، ستر کے بعد ہم کھو گئے یونیورسٹیوں کے بجائے مدرسے بناتے رہے۔فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ پاکستان پہلا جنوبی ایشیائی ملک ہے جس نے موبائل کا استعمال شروع کیا۔ وزیر اعظم کو بتاتا رہتا ہوں کہ ہمارے ساتھ آزاد ہونے والے سائنس کی وجہ سے آگے نکل گئے، ’وزیر اعظم کو بتایا ایسے ممالک میں وزیر سائنس ڈپٹی وزیر اعظم کے برابر ہوتا ہے‘۔اللہ کرے وزیراعظم کا دھیان آجائے،ابھی تک تونہیں آیا،فوادچودھری کے مسکراتے ہوئے بیان پرتقریب میں تالیاں بج گئیں۔

مزید : قومی /علاقائی /سندھ /کراچی /اہم خبریں


loading...