سپریم کورٹ،سیالکوٹ میں 2بھائیوں کے قتل میں ملوث ملزمان کی سزا 10 سال میں تبدیل

سپریم کورٹ،سیالکوٹ میں 2بھائیوں کے قتل میں ملوث ملزمان کی سزا 10 سال میں تبدیل
سپریم کورٹ،سیالکوٹ میں 2بھائیوں کے قتل میں ملوث ملزمان کی سزا 10 سال میں تبدیل

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ نے سیالکوٹ کے 2 بھائیوں کے قتل میں ملوث ملزموں کی سزا کو 10 سال قید میں تبدیل کردیا،عدالت نے عمر قید کی سزا پانے والے 5 ملزمان کی سزا کو بھی 10 سال کی سزا میں تبدیل کر دیا گیا۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ پہلا واقعہ دیکھ رہا ہوں جہاں بغیر کسی وجہ لوگ پہلے سے مظاہرہ کر رہے تھے،لوگ کہتے ہیں کہ یہ ڈاکو ہیں اور بس انہیں مارنا شروع کر دیتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں سیالکوٹ کے 2بھائیوں کے قتل میں ملوث ملزمان کی سزا کے خلاف اپیل پر سماعت ہوئی، چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں بنچ نے کیس کی سماعت کی،چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ اس کیس میں 2 کہانیاں بنائی گئی ہیں،ایک ایف آئی آر میں پولیس نے درج کی جس میں 4 افراد زخمی ہوئے،4 افراد میں سے بلال اور ذیشان کی موت ہو گئی،چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ دوسری ایف آئی آر سپریم کورٹ کے از خود نوٹس کے بعد درج ہوئی،موقع سے 2 پستول اور 10 گولیاں بھی برآمد ہوئیں۔

وکیل نے کہا کہ 2افراد کو ڈاکو ڈاکو کہہ کر ان پر لوگوں نے حملہ کیا اور انہیں مار دیا،چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ بچپن میں ہم محاورے سنتے تھے وہ اب جا کر سمجھ آرہا ہے،صرف یہ کہا گیا کہ کچھ عرصہ پہلے کرکٹ گراوَنڈ میں ان کا جھگڑا ہوا تھا،پہلا واقعہ دیکھ رہا ہوں جہاں بغیر کسی وجہ لوگ پہلے سے مظاہرہ کر رہے تھے،لوگ کہتے ہیں کہ یہ ڈاکو ہیں اور بس انہیں مارنا شروع کر دیتے ہیں،عدالت نے سزائے موت کے 7 ملزمان کی سزا کو 10سال قید میں تبدیل کر دیا،عمر قید کی سزا پانے والے 5 ملزمان کی سزا کو بھی 10 سال کی سزا میں تبدیل کر دیا گیا۔واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے2010 میں سیالکوٹ کے رہائشی منیب اورمغیث کے قتل کا ازخودنوٹس لیاتھا۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد


loading...