اے نگاہِ شوخ جب سے تو نے بسمل کر دیا | امیر خسرو|

اے نگاہِ شوخ جب سے تو نے بسمل کر دیا | امیر خسرو|
اے نگاہِ شوخ جب سے تو نے بسمل کر دیا | امیر خسرو|

  

اے نگاہِ شوخ جب سے تو نے بسمل کر دیا

بیٹھنا بھی دردِ دل نے اُٹھ کے مشکل کر دیا

دل کو ہاں ہاں دل کہے جانے کے قابل کر دیا

تم نے اس انداز سے دیکھا کہ بسمل کر دیا

کیاکہوں اے انتظارِ دوست تجھ کو کیاکہوں

جینا تو آساں نہ تھا  مرنا بھی مشکل کر دیا

 دل تھا   دل تھا  ہاں وہ شوخ شورش آفریں دل تھامرا

حسن کے خلوت کدے کو جس نے محفل کر دیا

طور پر بجلی گرانے والے کچھ معلوم ہے

تو نے ہر ذرہ کو اک حسرت بھرا دل کر دیا

اللہ اللہ قدرتیں تیری نگاہِ ناز کی

دیکھنے والوں کو سر سے تا قدم دل کر دیا

جذب اس کو کہتے ہیں جوشِ وفا یہ چیز ہے

ناوکِ قاتل کو ہم نے حسرتِ دل کر دیا

بے نیازِ  خلق تھی غیرت  نیازِ عشق کی

حسن نے اس کو زمانے کے مقابل کر دیا

آپ کے غم میں ہوا خسرو کو حاصل یہ فروغ

درد جب چمکا تو دل کو ماہِ کامل کرد یا

شاعر: امیر خسرو

(انتخاب کلامِ امیر خسرو(اردو کلام):مرتبہ؛مسعود انور علوی کاکوی،سالِ اشاعت،1984)

Ay   Nigaah -e -Shaokh    Jab    Say    Tu    Nay    Bismill    Kar    Daiya

Baithna    Bhi    Dard-e- Dil    Nay    Uth    K    Mushkill    Kar    Daiya

Dil    Ko    Haan    Haan    Dil    Kahay    Jaanay   K    Qaabil      Kar    Daiya

Tum    Nay    Iss    Andaaz   Say   Dekha    Keh    Bismill    Kar    Daiya

Kaya    Kahun    Ay     Intezaar -e- Dost   Tujh    Ko    Kaya    Kahun

Jeena To    Asaaan   Na   Tha    Marna    Bhi    Mushkill    Kar    Daiya

Dil     Tha     Dil    Tha     Haan    Wo    Shorash    Aafreen    Dil    Tha    Mira

Husn    K    Khalwat    Kaday    Ko    Jiss    Nay    Mehfill   Kar    Daiya

Toor    Par    Bijli    Giraanay   Waalay    Kuch     Maloom   Hay

Tu    Nay    Har    Zarray    Ko    Ik   Hasrat    Bhara    Dil    Kar    Daiya

AALAH    ALLAH     Qudraten    Teri    Nigaah-o- Naaz     Ki

Daikhnay     Waalon     Ko     Sar    Say   Ta    Qadam    Dil   Kar    Da

Jazb    Iss    Ko    Kehtay    Hen     Josh-e- Wafa    Yeh    Cheez    Hay

Naavik -e- Qaaatil    Ko    Ham    Nay    Hasrat-e- Dil    Kar    Daiya

Be    Nayaaz -e- Khalq    Thi     Gairat    Nayaaz -e- Eshq Ki

Huasn     Nay    Iss     Ko    Zamaanay    K   Muqaabil   Kar    Daiya

Aap    K    Gham    Men    Hua    KHUSRAU    Ko    Haasil    Yeh    Farogh

Dard    Jab    Chamka    To    Dil    Dil    Ko    Maaj -e- Kaamil    Kar    Daiya

Poet: Ameer     Khusrau

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -