خدا کی راہ میں دینا ہے گھر کا بھر لینا | امیر مینائی |

خدا کی راہ میں دینا ہے گھر کا بھر لینا | امیر مینائی |

  

خدا کی راہ میں دینا ہے گھر کا بھر لینا

اِدھر دیاکہ اُدھر داخل خزانہ ہوا

پڑا جو سایۂ  گیسو تو وہ کمر لچکی

ڈھلا جو کاندھے سے آنچل تو دردِ شانہ ہوا

پتا امیر کا منزل میں گور کے بھی نہیں

یہاں سے آگے الہیٰ کدھر روانہ ہوا

شاعر: امیر مینائی

(کلامِ امیر مینائی(دیوان):اردو کلام)

Khuda    Ki     Raah    Men    Dena    Hay    Ghar    Ka    Bhar   Lena

Idhar    Diya    Keh    Udhar    Daakhil    Khazaana    Hua

Parra    Jo    Saaya -e-Gaisu    To    Wo    Kamar   Lachki

Dhalaa    Jo    Kaandhay    Say     Aanchal    To    Dard-e- Shaana    Hua

Pata    AMEER     Ka    Manzill    Men    Gor    K   Bhi   Nahen

Yahaan    Say   Aagay    Elaahi    Kidhar    Rawaana   Hua

Poet: Amieer    Minai

مزید :

شاعری -سنجیدہ شاعری -