فحش فلموں کی اداکارہ کا قتل، زندہ جلا دیا گیا

فحش فلموں کی اداکارہ کا قتل، زندہ جلا دیا گیا
فحش فلموں کی اداکارہ کا قتل، زندہ جلا دیا گیا
کیپشن:    سورس:   Instagram/boomboomship

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) 2ماہ قبل امریکی ریاست مشی گن میں فحش فلموں کی 33سالہ اداکارہ سوزی ژاﺅ کو قتل کر دیا گیا تھا اور اس کے 60سالہ قاتل جیفرے موریس کو گرفتار کر لیا گیا تھا۔ اب عدالت میں اس قتل کی واردات کے متعلق ایک انتہائی ہولناک انکشاف سامنے آ گیا ہے۔ ڈیلی سٹار کے مطابق عدالت میں بتایا گیا ہے کہ سوزی ژاﺅ کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد اس پر بہیمانہ تشدد کیا گیا اور ابھی وہ زندہ تھی کہ اسے آگ لگا دی گئی اور وہ زندہ جل کر مر گئی۔

سوزی کا پوسٹ مارٹم کرنے والے ڈاکٹر اینڈریو ہنوش نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ ”سوزی کا 90فیصد جسم بری طرح جل گیا تھا۔ حتیٰ کہ اس کے بال اور زبان بھی پوری طرح جل گئی تھی۔ “واضح رہے کہ 13جولائی کی صبح 8بجے دو لوگوں نے پارکنگ میں سوزی کی جلی ہوئی لاش دیکھ کر پولیس کو اطلاع دی تھی۔ فون ریکارڈ سے معلوم ہوا ہے کہ سوزی کی موت سے قبل سوزی اور اس کے قاتل کے درمیان کال پر 8بار رابطہ ہوا تھا۔ واردات سے چند روز قبل وہ دونوں ایک ہوٹل میں ایک ساتھ مقیم بھی رہے تھے۔

مزید :

بین الاقوامی -