کابل میں ڈرون حملہ، امریکہ نے غلطی کا اعتراف کرتے ہوئے معافی مانگ لی 

کابل میں ڈرون حملہ، امریکہ نے غلطی کا اعتراف کرتے ہوئے معافی مانگ لی 
کابل میں ڈرون حملہ، امریکہ نے غلطی کا اعتراف کرتے ہوئے معافی مانگ لی 

  

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ نے گزشتہ ماہ افغانستان کے دارالحکومت کابل میں کیے گئے ڈرون حملے میں ہونے والی شہری ہلاکتوں پر معافی مانگتے ہوئے اسے افسوسناک غلطی قرار دے دیا۔ڈیلی پاکستان گلوبل کے مطابق امریکی فوج کی طرف سے کیے گئے اس ڈرون حملے میں 7بچوں سمیت 10افغان شہری جاں بحق ہو گئے تھے۔ پینٹاگون کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ 29اگست کو کیے گئے ڈرون حملے کا ہدف داعش خراسان کا وہ خودکش بمبار تھا جو کابل کے ہوائی اڈے پر موجود امریکی و نیٹو فوجیوں پر حملہ کرنا چاہتا تھا۔

امریکی سنٹرل کمانڈ کے سربراہ اور میرین کور کے جنرل فرینگ مکنزی نے عالمی خبر رساں ایجنسی رائٹرز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ”حملے کے وقت مجھے یقین تھا کہ اس ڈرون حملے سے ایئرپورٹ پر موجود ہماری فورسز کو فوری طور پر لاحق خطرہ ختم ہو گیا ہے۔تاہم بعد میں ہماری تحقیقات میں یہ بات سامنے آئی کہ یہ حملہ ایک افسوسناک غلطی تھا، جس میں خودکش حملہ آور کی بجائے عام شہری نشانہ بن گئے تھے جن کا داعش کی مقامی تنظیم داعش خراسان کے رکن ہونے یا امریکی فورسز کے لیے براہ راست خطرہ ہونے کا امکان نہیں تھا۔“

مزید :

بین الاقوامی -