سیلاب کے بعد پاکستان میں بیماریوں اوراموات کا خطرہ، اقوام متحدہ  

  سیلاب کے بعد پاکستان میں بیماریوں اوراموات کا خطرہ، اقوام متحدہ  

  

لند ن (مانیٹرنگ ڈیسک) اقوام متحدہ کے ذیلی ادارے عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) نے خبردار کیا ہے کہ سیلاب کے بعد پاکستان میں بیماریوں اور اموات کی صورت دوسری آفت کا خطرہ ہے۔ڈائریکٹر ڈبلیو ایچ او ڈاکٹر ٹیڈروس نے ایک بیان میں کہا ہے کہ پاکستان کو موسمیاتی تبدیلیوں کے باعث سیلاب کی تباہ کاریوں کے بعد بیماریوں سے اموات کی صورت نئی آفت کا سامنا ہے۔انہوں نے کہا کہ ڈبلیو ایچ او  10 ملین ڈالر کے بعد امداد کیلئے نئی اپیل جاری کرے گی، دنیا بھر کے عطیات دینے والوں سے زندگیاں بچانے کیلئے دل کھول کر امداد کی گزارش ہے۔دوسری جانب سیلاب میں گھرے لاکھوں بچوں کی خطرے سے دوچار زندگیوں کیلئے اقوام متحدہ نے ہنگامی امداد کی نئی اپیل کردی ہے۔ اقوام متحدہ کے ادارہ برائے اطفال (یونیسیف) کا کہنا ہے کہ پاکستان میں سیلاب کے بعد 34 لاکھ بچوں کوفوری جان بچانے والی امداد کی ضرورت ہے۔این ڈی ایم اے کے مطابق سیلاب سے اب تک 552 بچوں سمیت تقریباً ڈیڑھ ہزار اموات ہوچکی ہیں۔ امریکی میڈیا کے مطابق یونیسیف کے پاکستان میں نمائندے عبداللہ فادل کا سندھ کے دور ے کے بعدکہنا تھا کہ پاکستان میں سیلاب سے متاثر بچے'کلائمیٹ ڈیزاسٹر' کی قیمت ادا کر رہے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ سندھ میں سیلاب نے مجموعی طورپر 16ملین بچوں کو متاثرکیا ہے، سندھ میں سیلاب سے متاثرہ بچے اسہال، ملیریا اور ڈینگی سمیت دیگر بیماریوں کا شکار ہیں، سیلاب سے متاثرہ بچوں کی مائیں بھی غذائی قلت کا شکار ہیں اور دودھ پلانے سے قاصر ہیں۔یونیسیف کے نمائند ے کا کہنا تھا کہ بے گھر ہونے والے خاندانوں کے پاس خوراک اور نہ ہی صاف پانی ہے، سکولوں، پانی کا نظام اور صحت کی سہولیات کا اہم بنیادی ڈھانچہ تباہی کا شکار ہے۔

یونیسیف

 اقوام متحدہ  

مزید :

صفحہ اول -