کراچی، کورنگی چشمہ گوٹھ فشری میں لانچ سے 3 ماہی گیروں کی نعشیں برآمد

 کراچی، کورنگی چشمہ گوٹھ فشری میں لانچ سے 3 ماہی گیروں کی نعشیں برآمد

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک ) شہر قائد میں ابراہیم حیدری تھانے کے علاقے کورنگی میں چشمہ گوٹھ فشری گیٹ نمبر ایک کے قریب لانچ سے 3 ماہی گیروں کی نعشیں برآمد ہوئیں پولیس کے مطابق جمعے اور ہفتے کی درمیانی شب تینوں ماہی گیر لانچ کے نچلے حصے میں بنائی گئی ٹنکی کی صفائی کے دوران زہریلی گیس موجود ہونے کی وجہ سے مبینہ طور پر دم گھٹنے کے باعث جاں بحق ہوئے جبکہ ایک ماہی گیر کو بے ہوشی کی حالت میں ہسپتال منتقل کردیا گیا جاں بحق ہونے والوں کی شناخت 40 سالہ ظہیر، 30 سالہ قادر اور 35 سالہ دیدارعلی کے نام سے کی گئی، تینوں ماہی گیر کورنگی چشمہ گوٹھ کے رہائشی اور ان کا آبائی تعلق اندرون سندھ سے تھا، عزیز و اقارب کے مطابق گزشتہ ماہ تقریباً 20 ماہی گیرمچھلی کے شکار کے لیے ایک لانچ میں سوار ہو کرکھلے سمندر میں گئے تھے۔مچھلی کے شکار کے دوران لانچ کے نچلے حصے میں بنائی گئی ٹنکی کی صفائی کے لیے ایک ماہی گیر داخل ہوا تو ٹینکی میں زہریلی گیس موجود ہونے کی وجہ سے وہ بے ہوش گیا جسے بچانے کے لیے مزید 3 ماہی گیر ٹنکی میں اترے اور زہریلی گیس موجود ہونے کے باعث دم گھٹنے سے جاں بحق ہوگئے پولیس کے مطابق بے ہوش ماہی گیر منور شاہ کو سندھ گورٹمنٹ کورنگی ہسپتال منتقل کردیا گیا جاں بحق ہونے والے ماہی گیروں میں لانچ کا ناخدا بھی شامل ہے۔لا پولیس نے واقعے سے متعلق تحقیقات شروع کردی۔

نعشیں برآمد

مزید :

صفحہ آخر -