متنازعہ ٹرانس جینڈر قانون ختم کیا جائے، پاکستان شریعت کونسل

متنازعہ ٹرانس جینڈر قانون ختم کیا جائے، پاکستان شریعت کونسل
متنازعہ ٹرانس جینڈر قانون ختم کیا جائے، پاکستان شریعت کونسل

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان شریعت کونسل نے کہا ہے کہ ٹرانس جینڈر قانون آئین و شریعت کے خلاف ہے۔ متنازعہ قانون منسوخ کیا جائے۔مزیدلائحہ عمل طے کرنےکیلئے 24 ستمبرکو آسٹریلیا مسجد ریلوے سٹیشن لاہور میں سیمینار ہو گا ۔

 پاکستان شریعت کونسل کے زیر انتظام آسٹریلیا مسجد لاہور میں اجلاس منعقدکیا گیا۔اجلاس میں علماء نے کہا کہ ٹرانس جینڈر قانون آئین و شریعت کے خلاف ہے ، اس قانون کو فی الفور منسوخ کیا جائے۔اجلاس میں تشویش کا اظہار کیا گیا کہ اسلامی جمہوریہ پاکستان میں قرآن وسنت کیخلاف قوانین کسی بیرونی ایجنڈے کے تحت پاس کئے جا رہے ہیں۔پارلیمنٹ ممبران اپنا کردار ادا کر کے اس متنازعہ قانون کو واپس لینے میں کردار ادا کریں۔اجلاس میں سیلاب زدگان کی فلاح وبہبود کیلئے کام کرنے والے تمام اداروں اور فلاحی تنظیموں کو خراج تحسین پیش کیا گیا۔تمام مخیر حضرات سے ان کے ساتھ مزید تعاون کی اپیل بھی  کی گئی۔اجلاس میں مولانا ظفر احمد قاسم اور پاکستان شریعت کونسل لاہورکے رہنما مولانا ڈاکٹر اسماعیل کے والد کے انتقال پر رنج وغم کا اظہار کیا گیااور دعائے مغفرت کی گئی ۔اجلاس میں پاکستان شریعت کونسل کے مرکزی جنرل سیکرٹری مولانا زاہد الراشدی کے علاوہ مولانا عبدالر ؤف ملک نے بطور مہمان خصوصی شرکت کی۔اجلاس ڈاکٹر عبدالواحد قریشی کی زیر صدارت منعقد ہوا،جس میں ڈاکٹر ملک محمد سلیم،قاری جمیل الرحمان اختر ،مولانا عثمان رمضان،مولانا گلفام،حافظ مدثر گجر ،مولانا سعادت،مولانا آصف بھلہ ،مولانا وقارو دیگر علماء کرام نے شرکت کی۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -