بقراط نے وبائی امراض دریافت کرکے ان کے علاج بھی دریافت کئے 

بقراط نے وبائی امراض دریافت کرکے ان کے علاج بھی دریافت کئے 
بقراط نے وبائی امراض دریافت کرکے ان کے علاج بھی دریافت کئے 

  

تحریر: ملک اشفاق

 قسط:18

 -4 وبائی امراض یا متعدی بیماریاں(Epidemic)

یہ ہزاروں سال قبل بقراط نے اپنے علم، مشاہدے، تجربے اور سخت محنت سے دریافت کر لیا تھا کہ کچھ بیماریاں ایسی ہوتی ہیں جو کسی علاقے میں بہت تیزی سے پھیلتی ہیں اور اس طرح ایک شخص سے دوسرے کو بہت جلدی متاثر کر دیتی ہیں۔ ایسی بیماریوں میں طاعون (Plague) جس کو کالی موت کہا جاتا تھا بلکہ اب بھی کہا جاتا ہے بہت ہی تیزی سے پھیلتی ہے اور ایک دن میں ہزاروں، لاکھوں انسانوں کی موت کا باعث بن سکتی ہے۔ اسی طرح ہیضہ، چیچک، جزام، خناق اور متعدی بخار وغیرہ وبائی امراض کے زمرے میں آتے ہیں۔ بقراط نے ان وبائی امراض کودریافت کرکے ان کے علاج بھی دریافت کئے تھے جو آج بھی ڈاکٹر اور طبیب اسی طریق پر کرتے ہیں۔

بقراط کی طبی اصطلاحات(Medical Terms)

 بقراط نے اپنے طبی مشاہدے اور تجربے سے کئی طبی اصطلاحات (Medical Terms) بھی وضع کیں۔ یہ طبی اصطلاحات بیماریوں کی شدت، کمی، نوعیت اور صحت کے حوالے سے وضع کئی گئی ہیں۔ ان طبی اصطلاحات کو آج بھی جدید میڈیکل سائنس میں من وعن استعمال کیا جاتا ہے۔

-1 بیماری میں ہذیان(Exacerbation)

 یقیناً بقراط نے امراض اور مریضوں پر زبردست تحقیق کی ہوگی کیونکہ اس نے یہ اصطلاحیں وضع کرتے ہوئے اس قدر اپنے علم و فن کا استعمال کیا کہ اصطلاح کے الفاظ میں بیماری کی نوعیت واضح ہو جاتی ہے۔ بقراط کا کہنا ہے کہ کچھ بیماریاں ایسی ہیں جو انسان کے ذہن کے خلیوں پر اثر انداز ہوتیں ہیں جس کی وجہ سے ایسی بیماری کا شکار شخص بلاوجہ، بلاوقت ہذیان بکنے لگتا ہے کیونکہ وہ ایسی ذہنی الجھن میں ہوتا ہے کہ اسے محسوس ہی نہیں ہوتا کہ وہ کیا کہہ رہا ہے۔ ہذیان(Exacerbation) کی اصطلاح آج تک میڈیکل سائنس میں مستعمل ہے اور آج تک اس کا کوئی متبادل نہیں ہے۔

-2بیماری کاعود آنا(Relapse)

 بقراط کا کہنا ہے کہ بعض اوقات فطری شفائی طاقت جوکہ انسان کے جسم کے اندر موجود ہوتی ہے، اس سے انسان صحت یاب ہو جاتا ہے لیکن کچھ غیر فطری عوامل کی وجہ سے وہی بیماری پھر عود آتی ہے۔ اس کے لیے بقراط نے Relapse کی اصطلاح وضع کی یعنی بیماری شدت پکڑ کر مرض کی فطری شفائی قوت پر غالب آ جاتی ہے۔

-3 فیصلہ (Resolution)

 جب مریض پر بیماری شدید ہو اور بنیادی ابتدائی طریقۂ علاج کارگر نہ ہو تو طبیب کو اہم فیصلہ کرنا ہوتا ہے۔ جیسا کہ کوئی آپریشن کرنا، فصد کھولنا، یا دیگر شدید نوعیت کے طریقہ علاج کو اپنانا۔ اس نوعیت کے مریض کے بارے میں اہم فیصلہ لینے کے لیے بقراط نے Resolution کی اصطلاح وضع کی۔

-4 بیماری کی طاقت کا غالب آ جانا(Crisis)

 بقراط کی یہ اہم اصطلاح ہے۔ اس اصطلاح کے حوالے سے انسانی جسم میں فطری شفائی قوت پر بیماری کی طاقت غالب آ جاتی ہے اور مریض موت کا شکار ہو جاتا ہے۔( جاری ہے )

نوٹ :یہ کتاب ” بک ہوم “ نے شائع کی ہے ، جملہ حقوق محفوظ ہیں (ادارے کا مصنف کی آراءسے متفق ہونا ضروری نہیں )۔

مزید :

ادب وثقافت -