تحفظ نہ ملنے‘دباؤپرگواہوں کامنحرف ہونامعمول بن چکا، عارف کمال

تحفظ نہ ملنے‘دباؤپرگواہوں کامنحرف ہونامعمول بن چکا، عارف کمال

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 
لاہور(نامہ نگارخصوصی)پراسیکیوٹر جنرل پنجاب عارف کمال نون نے میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہا ہے کہ گواہوں کے تحفظ کے قانون پرعمل درآمد نہ ہونے سے ملزم رہا ہوجاتے ہیں،تحفظ نہ ملنے اور دباؤپرگواہوں کامنحرف ہونامعمول بن چکا ہے،تفتیش میں پراسیکیوٹرز کو سپروائزری کردار نہ ملنا تشویش ناک ہے،ناقص تفتیش سے قانونی سقم دور نہیں ہوتے فائدہ ملزم اٹھاتے ہیں،ترقی یافتہ ممالک میں پراسیکیوٹرز تفتیش کوسپروائز کرتے ہیں،ناکافی سہولیات اور کرائے کی عمارتوں میں موجود پراسیکیوشن کے دفاتر المیہ سے کم نہیں،انہوں نے مزید کہا کہ پنجاب کے اٹھارہ گریڈ کے انتظامی افسروں کو وہ مراعات میسر ہیں جو بیسویں گریڈ کے پراسیکیوٹر کودستیاب نہیں،پراسیکیوشن ڈیپارٹمنٹ فوجداری نظام عدل میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتا ہے،تنخواہوں میں پائے جانے والے فرق سے پراسیکیوٹرز مایوسی کا شکار ہیں،ناکافی سہولیات کے باوجود ہمارے پراسیکیوٹرز تند دہی سے فرائض سرانجام دے رہے ہیں۔
عارف کمال 

مزید :

صفحہ آخر -