افسر پر تشددکرنیوالے4 ملزمان جسمانی ریمانڈ پر سی آئی اے کے حوالے 

   افسر پر تشددکرنیوالے4 ملزمان جسمانی ریمانڈ پر سی آئی اے کے حوالے 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(نامہ نگار)ماڈل ٹاؤن کچہری کے جوڈیشل مجسٹریٹ تصور اقبال خان نے حساس ادارے کے افسر (میجرحارث)کو تشدد کا نشانہ بنانے والے 4 ملزموں کو 4 روزہ جسمانی ریمانڈ پر سی آئی اے کے حوالے کردیا،عدالت نے ملزمان کو دوبارہ 22 اپریل کو پیش کرنے کا حکم بھی دیا ،کیس کی سماعت شروع ہوئی تومسلم لیگ (ن) کے ایم پی اے سلمان رفیق کے سکیورٹی گارڈ ملزمان اظہرندیم، علی رضا، اقبال اور محمد حسین کے وکلاء نے موقف اختیارکیا کہ اس میں سی سی ٹی وی فوٹیج کے بعد کسی بھی اور گواہ کی ضرورت نہیں ہے، ملزمان سے اب کچھ برآمدگی بھی نہیں کرنی،ملزمان پہلے ہی چار روز کے جسمانی ریمانڈ پر پولیس کی حراست میں رہ چکے ہیں، ملزمان سے اب کس چیز کی پوچھ گچھ کرنی ہے؟ مقدمہ مدعی کے وکیل نے موقف اختیارکیا کہ ملزمان کے موبائل فون لے لئے گئے ملزمان کے موبائل کا فرازنک کروانا باقی ہے یہ تو دہشت گردی کا معاملہ بنتا ہے کہ ایک آرمی افسر کو تشدد کا نشانہ بنایا مقدمہ کے تفتیشی افسر ظہیرالدین بابر اعوان نے استدعا کی کہ ملزمان کا مزید 10روزہ جسمانی ریمانڈ دیا جائے،ملزمان سے آلہ ضرب برامد کرنا ہے، ابھی ملزمان سے مزید تفتیش کرنی ہے عدالت نے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد اپنا فیصلہ کچھ دیر کے لئے محفوظ کیا جو بعدازاں سنا دیا گیا، عدالتی سماعت کے موقع پر ماڈل ٹاؤن کچہری میں پولیس کی بھاری نفری تعینات کی گئی تھی۔

مزید :

علاقائی -