آج یوم بدر،ملتان میں مختلف مذہبی تنظیموں کے زیراہتمام تقریبات 

آج یوم بدر،ملتان میں مختلف مذہبی تنظیموں کے زیراہتمام تقریبات 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


 ملتان (سٹی رپو رٹر) یوم بدر آج 17 رمضان المبارک کو انتہائی عقیدت و احترام سے منایا جائے گا۔ اس سلسلہ میں مختلف سماجی و مذہبی تنظیموں کے زیر اہتمام تقریبات منعقد کی جائیں گی محمد بن قاسم بلائن ویلفیئر کیمپلکس کے زیر اہتمام آج یوم بدر کے سلسلے میں تقریبات منعقد(بقیہ نمبر19صفحہ6پر)
 اور معززین کے اعزاز میں افطار ڈنر دیا جائے گا جس میں سماجی سیاسی مذہبی رہنماؤں ک ثیر تعداد میں شرکت کریں گے دریں اثناں گزشتہ روز  یوم بدر کے سلسلے میں ملتان شہر میں تقریبات خان انعقاد کیا گیا۔ علمائکرام نے مختلف تقاریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ غزوہ بدر طلوع اسلام کے بعد پہلا معرکہ حق و باطل تھا جس میں حضور نبی اکرمؐ کی قیادت میں مٹھی بھر مسلمانوں نے کفار مکہ کے لشکر کو شکست فاش دی۔ حق و باطل کا یہ معرکہ تاقیامت باطل کے سامنے اہل حق کو ڈٹ جانے کیلئے ولولہ تازہ کرتا رہے گا۔ غزوہ بدر سے یہ واضح ہو گیا ہے کہ تعداد کی بجائے استعداد اور قوت ایمانی ہی کلیدی کامیابی ہے۔ جماعت اسلامی خواتین ونگ کی سیکرٹری جنرل دردانہ صدیقی اور صدر پنجاب جنوبی تسنیم سرور نے کہا ہے کہ غزوہ بدر وہ فیصلہ کن اور تاریخ ساز جنگ تھی جس میں ملت اسلامیہ کی تقدیر اور دعوت حق کے مستقبل کا فیصلہ ہوا اس کے بعد آج تک مسلمانوں کو جتنی فتوحات اور کامیابیاں حاصل ہوئیں اور ان کی جتنی حکومتیں اور سلطنتیں قائم ہوئیں وہ سب اسی فتح مبین کی مرہون منت ہیں جو بدر کے میدان میں مٹھی بھر جماعت کو حاصل ہوئی۔ دریں اثناء متحدہ مسلم موومنٹ کا اجلاس منعقد ہوا جس کی صدارت جنرل سیکرٹری حافظ اللہ دتہ کاشف بوسن نے کی۔ اپنے صدارتی خطاب میں ان کا کہنا تھا کہ غزوہ بدر حق و باطل کے درمیان تفریق کا نام اورجرات،عزیمت و استقامت کا پیغام دیتا ہے،اس جنگ میں مسلمانوں کی فتح نے واضح کر دیا کہ اسلام حق ہے اور حق ہی فتح یاب ہوتا ہے، کفر و شرک باطل ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسلام دشمن قوتیں دوبارہ ہماری صفوں میں گھس کر انتشار پھیلانا چاہتی ہیں ان کو منہ توڑ جواب دینے کیلئے مسلم امہ کو اپنے ذاتی اختلافات بھلا کر ایک پلیٹ فارم پر متحد ہونا ہو گا۔ نائب صدر علامہ عون محمد نقوی، ایڈووکیٹ وسیم ممتاز،حافظ ظفر قریشی، شیخ ارشد محمود، ایوب مغل،ضلعی صدر ملک عمران یوسف، سنٹرل ایگزیکٹیو شیخ صلاح الدین نے اپنے خطاب میں کہا کہ غزوہ بدر نے یہ ثابت کردیا کہ ثابت قدمی، جذبہ جہاد،شوق شہادت، اطاعت امیر سے کڑے حالات کو اچھے حالات کی طرف موڑا جاسکتا ہے، محض دنیاوی وسائل، آلات جنگ اور سپاہیوں کی کثرت ہی جنگ جیتنے کیلئے کافی نہیں ہوتی۔انہوں نے کہا کہ حق  باطل کے ساتھ کسی مرحلے اور کسی سطح پر بھی سمجھوتے کا روادار نہیں اگر مسلمان اپنے عظیم مشن کو پس پشت ڈال کر باطل کے عقائد و نظریات کے ساتھ سمجھوتہ کرلیتے اور اپنے عقائد و نظریات سے فکری و روحانی وابستگی کو کمزور کر لیتے تو معرکہ بدر کبھی برپا نہ ہوتا۔