لودھراں،گلی محلوں میں صفائی انتظامات صفر،افسر غائب

لودھراں،گلی محلوں میں صفائی انتظامات صفر،افسر غائب

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 
لودھراں (نمائندہ پاکستان) میونسپل کمیٹی کے افسران جوکہ اپنے دفاتر میں ٹھنڈے کمروں تک محدود ہیں اور اپنی ذمہ داریاں پوری کرنے کی بجائے کاغذی کاروائیوں تک محدود نظر آتے ہیں۔ لودھراں شہر میں صفائی ستھرائی کا یہ عالم ہے کہ  شہر سے گزرنے والی قومی شاہراہ جہاں سے دن بھر افسران کا گزر رہتا ہے کو صاف کرنے کے بعد باقی پورے شہر کو عملہ صفائی (بقیہ نمبر31صفحہ6پر)
کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا جاتا ہے۔کوئی بھی آفیسر شہر میں صفائی ستھرائی کا جائزہ لینے کی تکلیف نہیں کرتا۔جس کی وجہ سے شہر بھر میں مختلف علاقوں جن میں،اقبال چشتی روڈ،خمیسہ بھٹہ روڈ،مکی مسجد روڈ،برکت آرے والاروڈ،گلی محمدیہ فریدیہ،گلی سکول نمبر 2والی،گلی بٹ والی،گلی یو بنک والی،بستی گھیر،محلہ لیاقت آباد،محلہ سادات،گلی کمہاراں والی،محلہ کوڑے والا،جیونے والا کے علاقے بھی شامل ہیں جہاں جگہ جگہ کوڑے کرکٹ کے ڈھیر فلتھ ڈپوں کی شکل اختیار کر چکے ہیں اور ان سے اٹھنے والے تعفن نے لوگوں کا سانس لینا بھی دوبھر کر دیا ہے۔جس پر شہریوں عطا خاں ترین،بابا حسن بخش،ملک محمد نواز،محمد سعید،اللہ ڈیوایا،محمد نصیر،ریاض بلوچ وغیرہ نے کہاہے کہ  ہمارے علاقے میں سوئی گیس کی لائنیں بچھانے کیلئے گلیوں اور سڑکوں کو کھنڈرات میں بد ل دیا گیا۔اب اس کے علاوہ میونسپل کمیٹی کا عملہ صفائی  ہفتے کے دوران کئی کئی روز غائب رہتا ہے جب ان سے پوچھا جائے تو وہ یہ کہہ کر اپنی جان چھڑا لیتا ہے کہ افسران نے ہماری اسپیشل ڈیوٹی لگا رکھی تھی۔عملہ صفائی نہ آنے کی وجہ سے کوڑا کرکٹ کے پڑے ہوئے ڈھیروں میں سے گرمی کی وجہ سے بدبو اورتعفن پھیلا ہوا ہے جس سے وبائی امراض پھوٹنے کا اندیشہ ہے۔شہریوں نے وزیر اعلی پنجاب۔ کمشنر ملتان اور ڈپٹی کمشنر لودھراں سے لودھراں شہر میں صفائی ستھرائی کی صورتحال بہتر بنانے اور صفائی پر آنے والے اخراجات کے بنائے جانے والے مبینہ فرضی بلوں کی تحقیقات کروانے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔اس سلسلہ میں جب چیف آفیسر میونسل کمیٹی جواد احمد سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ میرے علم میں نہیں ہے کہ عملہ صفائی کام نہیں کر رہا میں ابھی اپنے ایکسئین سے پوچھتا ہوں۔اور صفائی ستھرائی کی صورتحال بہتر بنانے کی کوشش کرتے ہیں۔
غائب