اسمبلی میں تشد د، پرویز الٰہی نے مقدمے کیلئے عدالت میں درخواست دیدی

اسمبلی میں تشد د، پرویز الٰہی نے مقدمے کیلئے عدالت میں درخواست دیدی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


        لاہور (نامہ نگار)  اسپیکر پنجاب اسمبلی پرویز الہی نے خود پر تشدد  کے مقدمے کے اندراج کے لیے عدالت سے رجوع کرلیا۔ پرویز الہی نے سیشن کورٹ میں اندراج مقدمہ کی درخواست دی جو حمزہ شہباز اور آئی جی پنجاب، ایس  ایس  پی اور  دیگر کے خلاف دائر کی گئی ہے۔ اس  کے علاوہ اندراج مقدمہ کی درخواست میں لیگی ایم پی ایز اور 200 نامعلوم افراد کا بھی ذکر کیا گیا ہے۔ پرویز الہی کی جانب سے وکیل عامر سعید راں نیدرخواست دائرکی جس میں مقف اختیار کیا گیا ہیکہ ہم نے متعلقہ تھانے میں اندراج مقدمہ کی درخواست دائرکی لیکن پولیس ہماری درخواست پر کارروائی کرنے سے گریزکر رہی ہے لہذا عدالت پولیس کو اندراج مقدمہ کا حکم جاری کرے۔ سیشن عدالت نے پرویز الہی  کی درخواست  پر ایس ایچ او تھانہ قلعہ گجر سنگھ سے 25 اپریل کو رپورٹ طلب کر لی۔ واضح رہے کہ پنجاب اسمبلی میں ہنگامہ آرائی کے دوران چوہدری پرویز الہی بھی نرغے میں آگئے اور تشدد سے زخمی ہوگئے تھے۔دوسری طرف سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویزالٰہی نے کہا ہے کہ 16 اپریل کا اجلاس ختم ہوتے ہی ڈپٹی سپیکر کے وہ تمام اختیارات بھی ختم ہو چکے ہیں جو ان کو تفویض کیے گئے تھے، ڈپٹی سپیکر کو پنجاب اسمبلی کے افسران کی معطلی کا کوئی اختیار نہیں دیا گیا تھا، انہوں نے اپنے اختیارات سے تجاوز کیا ہے، تمام افسران بحال ہیں کیونکہ وہ معطل ہی نہیں ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ ڈپٹی سپیکر کو عدالتی احکامات کے مطابق ڈپٹی سپیکر کو صرف وزیراعلیٰ کے انتخاب کیلئے انتظامی معاملات کی حد تک اختیار حاصل تھا، اسمبلی قواعد کے مطابق ڈپٹی سپیکر کو جو اختیارات دئیے گئے ان میں صرف وزیراعلیٰ کے امیدواروں کے کاغذات کی جانچ پڑتال، شیڈول کا اجرا، الیکشن کروانا اور انتظامی اختیارات شامل تھے، ان کو کوئی ڈسپلنری پاورز تفویض ہی نہیں کی گئی تھیں لہٰذا پنجاب اسمبلی کے افسران کی معطلی کے ان کے احکامات کی کوئی قانونی حیثیت نہیں ہے۔
پرویز الٰہی درخواست

مزید :

صفحہ اول -