پی ٹی آئی کے بعد ایک اور جماعت کا انتخابات کا مطالبہ

پی ٹی آئی کے بعد ایک اور جماعت کا انتخابات کا مطالبہ
پی ٹی آئی کے بعد ایک اور جماعت کا انتخابات کا مطالبہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ ملک کا آئین قومی وحدت کی علامت ہے  مگر اس وقت مظلوم بن چکا ہے۔ صدر مملکت پارلیمنٹ کو تسلیم کرنے سے انکاری ہیں ، ملک کا سب سے بڑا صوبہ بغیر وزیراعلیٰ کے چل رہا ہے، نئے وزیراعلیٰ کو پنجاب کے گورنر ماننے کو تیار نہیں۔ قوم میں پولرائزیشن اور تفریق خطرناک حدوں کو چھو رہی ہے۔ ملک کو درپیش مسائل سے نکالنے کا واحد حل انتخابات کا انعقاد ہے۔ الیکشن سے قبل الیکٹورل ریفارمز ہونی چاہیے۔

جماعت اسلامی کے سیکریٹری جنرل امیر العظیم اور سیکریٹری اطلاعات قیصر شریف کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سراج الحق نے کہا کہ جماعت اسلامی متناسب نمائندگی کے تحت الیکشن چاہتی ہے۔ جماعت اسلامی نے انتخابی اصلاحات کا مکمل پیکیج تیار کیا ہے، جسے تمام سیاسی جماعتوں کے ساتھ شیئر کیا جائے گا۔ ملک کو الیکٹیبلز اور مافیاز کی سیاست سے نجات چاہیے۔ سیاست پر اسٹیبلشمنٹ کے گملوں کی پیداوار چند خاندانوں کا قبضہ ہے۔ کرپٹ اشرافیہ کے ہوتے ہوئے غریب کی قسمت نہیں بدل سکتی۔ پرانے نظام کی حفاظت کے لیے نئے چوکیدار آ گئے۔

انہوں نے کہا کہ اصولی طور پر ان لوگوں کو کوئی عہدہ قبول نہیں کرنا چاہیے جن کے خلاف کرپشن کے کیسز ہیں۔چاہتے ہیں نئے وزیراعظم ماضی سے سبق سیکھیں۔ معیشت کی بہتری کے لیے قومی ڈائیلاگ کا آغاز ہونا چاہیے۔  قبل ازیں سراج الحق نے منصورہ میں مجلس عاملہ کے اجلاس کی صدارت کی۔ انہوں نے نائب امرا لیاقت بلوچ، میاں محمد اسلم، سیکریٹری جنرل امیر العظیم اور سینیٹر مشتاق احمد خان پر مشتمل انتخابی ریفارمز سے متعلق مختلف سیاسی جماعتوں سے ڈائیلاگ کرنے کے لیے کمیٹی بھی تشکیل دے دی۔ مجلس عاملہ نے فلسطین میں صیہونی قابض افواج کی دہشت گردانہ سرگرمیوں اور سوئیڈن میں اسلام دشمن قوتوں کی جانب سے قرآن پاک کی بے حرمتی کے اعلانات پر شدید غم و غصے کا اظہار کیا اور اقوام متحدہ اور او آئی سی سے اپیل کی کہ وہ ان واقعات کا نوٹس لے۔

مزید :

قومی -