سروس ٹربیونل فیصلہ پر عملدرآمد نہ ہوسکا ،بااثر پٹواری تاحال سیٹ پر براجمان

سروس ٹربیونل فیصلہ پر عملدرآمد نہ ہوسکا ،بااثر پٹواری تاحال سیٹ پر براجمان

لاہور (اپنے نمائندے سے) موضع کاہنہ کا چارج لینے کی ضد بااثر پٹواری سروس ٹربیونل کے جج کے فیصلے پر بھاری پڑگیا 10 روز گزر جانے کے بعد بھی سروس ٹربیونل کے فیصلے پر عمل درآمد نہ ہوسکا سروس ٹربیونل میں درخواست دینے والے متاثرہ پٹواری سے زبردستی ریکارڈ چھین لیا دوبارہ عدالت میں جانے اور شور مچانے پر سنگین نتائج کی دھمکیوں کا سلسلہ جاری ہے مزید معلوم ہوا ہے کہ موضع کاہنہ میں تعینات پٹواری امداد حسین کو تبدیل کرتے ہوئے ایک اعلیٰ شخصیت کی سفارش پر ذوالفقار علی نامی پٹواری کو تعینات کردیا گیا تھا تاہم ایڈیشنل کلیکٹر لاہور کے اس فیصلے کو متاثرہ پٹواری امداد حسین نے سروس ٹربیونل میں چیلنج کردیا جس پر سروس ٹربیونل کے جج جسٹس کریم بخش عابد نے ایڈیشنل کلیکٹر لاہور کے ان احکامات کو معطل کرتے ہوئے اسے غیر قانونی اقدام قراردیا اور مذکورہ پٹواری کی تعیناتی کا فیصلہ کمشنر لاہور کو کرنے کی ہدایت کی اور پٹواری امداد حسین جب ایڈیشنل کلیکٹر کے پاس سروس ٹرنیونل کے جج کے فیصلے کی کاپی لیکر پہنچے تو اسی وقت اس کو معطل کردیا گیا اور محکمہ مال کے اعلیٰ افسران کی جانب سے آشیر باد ملنے پر غیر قانونی طور پر تعینات ہونے والے بندوبست کے پٹواری ذوالفقار علی کو ایک سوچی سمجھی منصوبہ بندی کے ذریعے تعینات کردیا گیا ہے مذکورہ پٹواری کا کام بندوبست کا کام مکمل کروانا ہے مگر اس مذکورہ پٹواری کو زبردستی چارج دلوانے اور سروس ٹربیونل کے کریم بخش عابد کے احکامات کو نظر انداز کرنے کے ساتھ ساتھ سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو کی واضح احکامات کو بھی ہوا میں اڑا دیا گیا ہے کیوںکہ سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو شیخ سعید نے ضلع لاہور کا بندوبست مکمل کرنے تک بندوبستی تمام پٹواریوں کو بندوبست کا کام مکمل کرنے تک کسی بھی جگہ ٹرانسفر کرنے سے منع کررکھا ہے۔ مزید معلوم ہوا ہے کہ مذکورہ پٹواری ذوالفقار علی کے خلاف جہاں رنگے ہاتھوں رشوت لیتے ہوئے گرفتار ہونے پر 3ماہ قبل محکمہ اینٹی کرپشن میں مقدمہ درج ہوچکا تھا وہاں ؟؟ وڑائچ موضع میں تعیناتی کے دوران بااثر لینڈ مافیا کو فردات جاری کرتے ہوئے غیر قانونی طور پر نوازنے اور ریونیو ریکارڈ میں باضابطگیاں کرنے پر محکمہ مال کے اعلیٰ افسران کے پاس انکوائریاں بھی زیر سماعت ہیں۔ گر اس کے باوجود مذکورہ پٹواری کی تعیناتی کے باعث محکمہ مال کے اعلیٰ افسران کی کارکردگی بھی ایک ؟؟؟؟؟ بن چکی ہے دوسری جانب سروس ٹرنیونل کے فیصلہ کی روشنی میں مذکورہ پٹواری امداد حسین کو ابھی تک بحال کیا گیا ہے اور نہ ہی کمشنر لاہور جواد رفیق ملک نے اس کیس کی سماعت کی ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1