فرٹیلائزر سیکٹرکا براہ راست گیس خریدنے کی تجویز کا خیرمقدم

فرٹیلائزر سیکٹرکا براہ راست گیس خریدنے کی تجویز کا خیرمقدم

کراچی (آن لائن) فرٹیلائزر سیکڑ نے اقتصادی رابطہ کمیٹی کی جانب سے فرٹیلائزر پلانٹس کو براہ راست گیس پیداواری کمپنیوںسے گیس خریدنے کی تجویز کی منظوری کے فیصلے کو سراہتے ہوئے صدر پاکستان آصف علی ذرداری ، وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف ، مشیر برائے پٹرولیم اور قدرتی وسائل ڈاکٹر عاصم حسین اور وزیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ کا شکریہ ادا کیا ہے اور امید ظاہر کی ہے اس سے گیس بحران سے بری طرح متاثر ملکی فرٹیلائرز سیکٹر کو ریلیف ملے گا۔اس فیصلے سے ملکی گیس ڈسٹری بیوشن کمپنیوں پر سے لوڈ کو کم کرنے میں مد د ملے گی اور فرٹیلائرز پلانٹس مسابقتی قیمتوں پر اپنی ضرورت کے مطابق گیس براہ راست گیس فیلڈز سے حاصل کر سکےں گے۔فرٹیلائرزمینوفیکچرزپاکستان ایڈوائزی کونسل کے ایگزیکٹوڈائریکٹرشہاب خواجہ نے حکومتی فیصلہ سراہتے ہوئے اپیل کی ہے کہ سوئی سدرن گیس پاکستان کے نیٹ ورک پر موجود چاروں فرٹیلائزر پلانٹس کو فی الفور گیس کی فراہمی بحال کی جائے اور دوسرے شعبوں کے طرح اسے بھی کام کرنے کا حق دیا جائے انہوں نے حکومت کی جانب سے گیس کی فروخت پر انفراسٹرکچرڈیولپمنٹ ٹیکس کو سراہتے ہوئے کہا کہ اس سے حکومت کو ملک میں آئل اینڈ گیس کے شعبے میں مزید سرمایہ کاری کرنے کا موقع ملے گا اور اس سے ملکی صنعتیں اور گھریلوصارفین مستفید ہو سکیں گے۔ انہوں نے کہا کہ سال 2012میں فرٹیلائرزپلانٹس کو مہینے میں صرف ایک دن گیس فراہم کی گئی ہے جس سے چاروں پلانٹس شدید مالی مشکلات کا شکار ہوچکے ہیں ۔ اگر فرٹیلائزر پلانٹس کو گیس فراہمی شروع نہ کی گئی تو خدشہ ہے کہ یہ پلانٹس مکمل طور پر بند ہو جائیں گے جسکے نتیجے میں لاکھوں لوگوںکا روزگار متاثر ہونے کے ساتھ ملک یوریا کی پیداواری صلاحیت سے بھی محروم ہو جائے گا۔انہوں نے یقین دلایا کہ اگر فرٹیلائزر پلانٹس کو گیس مکمل طور پر بحال کر دی جائے تو ملکی یوریا کی قیمت میں نمایاں کمی آسکتی ہے اور کسانوں پر سے 53 ارب روپے سالانہ کا اضافی بوجھ کم کیا جا سکتا ہے۔انہوںنے گیس کی منصفانہ تقسیم پر زور دیتے ہوئے کہا کہ فرٹیلائزر سیکٹر واحد سیکٹر ہے جسکی گیس مکمل طور پر بند ہے جبکہ پاور سیکٹر،صنعتیں،ٹیکسٹائل اور سی این جی سیکٹرکو گےس کی فراہمی کی جا رہی ہے

مزید : کامرس