مودی نے کشمیر جیسی جنت نظیر وادی کو جہنم بنا دیا ،پاکستان میں بھارتی در اندازی کے ٹھوس شواہد موجود ہیں :خواجہ محمد آصف

مودی نے کشمیر جیسی جنت نظیر وادی کو جہنم بنا دیا ،پاکستان میں بھارتی در ...
مودی نے کشمیر جیسی جنت نظیر وادی کو جہنم بنا دیا ،پاکستان میں بھارتی در اندازی کے ٹھوس شواہد موجود ہیں :خواجہ محمد آصف

  


اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی وزیر دفاع و پانی و بجلی خواجہ محمد آصف نے کہا ہے کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں نسل کشی کے جرم میں ملوث ہے، بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی پاکستانی حصوں کی بات نہ کریں کیونکہ انہوں نے تو کشمیر جو کہ ایک جنت نظیر تھا میں ظلم و بربریت کی انتہا کر کے اسے جہنم بنا دیا ہے، نہتے کشمیریوں کے قتل عام سے بڑی ریاستی دہشت گردی اور کیا ہو سکتی ہے؟بھارتی وزیر اعظم کے ہاتھ خون سے رنگے ہوئے ہیں اور وہ کشمیر سمیت بھارت میں بھی قتل عام میں ملوث ہیں۔

نجی ٹی وی چینل’’جیونیوز‘‘ کے پروگرام کیپٹل ٹاک‘‘ میں خصوصی انٹرویودیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان بھارت سے مذاکرات کا مخالف نہیں لیکن بھارت سے کوئی امیدیں وابستہ نہیں کی جا سکتیں، اس وقت مقبوضہ کشمیر کی صورت حال انتہائی بدتر ہے جہاں بے گناہ لوگوں کا قتل عام تو کیا جا ہی رہا تھا اب مخصوص پیلٹس گن کے استعمال سے کشمیری نوجوانوں کو اندھا بھی کیا جا رہا ہے جس سے عالمی برادری بھی واقف ہے اور نہتے کشمیریوں پر بھارتی مظالم کی مذمت کر رہی ہے لیکن بھارتی وزیر اعظم دوسروں کے خلاف بیانات دے رہے ہیں جو ان کی کشمیر سے عالمی توجہ ہٹانے کی ایک ناکام کوشش ہے کیونکہ دنیا کے سامنے بھارتی چہرہ بے نقاب ہو رہا ہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ بھارت میں اقلیتوں کے قتل عام کی بھارت کی ایک تاریخ رہی ہے جہاں سکھوں سمیت مسلمانوں اور دیگر اقلیتوں کا قتل عام کیا جاتا ہے، بھارت مقبوضہ کشمیر میں بھی نہتے کشمیریوں کا قتل عام کر رہا ہے لیکن سلام ہے ان جوانوں کو جو اپنی آزادی کی جدوجہد کو جاری رکھے ہوئے ہیں اور اپنے بنیادی حق حق خود ارایت کے لیے کوشاں ہیں۔

وفاقی وزیر خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ بھارت کے ساتھ دہشت گردی پر بات ہو یا کسی اور مسئلے پر لیکن مسئلہ کشمیر سب سے پہلے زیر بحث آئے گا، پاکستان اپنے کشمیری بہن بھائیوں کی سیاسی، سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رکھے ہوئے ہے اور مسئلہ کشمیر کو ہر عالمی فورم پر اجاگر کیا جا رہا ہے جس کی وجہ سے عالمی برادری بھی کشمیر کی صورت حال کی مذمت کر رہی ہے اور تشویش کا اظہار بھی کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کے خلاف پاکستان میں دراندازی کے ٹھوس شواہد ہمارے پاس موجود ہیں اور بھارتی خفیہ ایجنسی کے حاضر سروس افسر کلبھوشن یادیو کے یہاں سے پکڑے جانے اور اس کے پاکستان میں بھارتی تخریب کاری کے اعترافی بیان کے شواہد بھی عالمی برادری کو دئیے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی ایک عالمی مسئلہ ہے جس سے دنیا کا کوئی ملک بھی محفوظ نہیں اس لیے اس مسئلے پر عالمی سطح پر اقدامات کرنے چاہئیں، پاکستانی مسلح افواج ملک سے دہشت گردی کے جڑ سے خاتمے کے لیے جنگ لڑ رہی ہے، جس میں ہمیں کافی اہم کامیابیاں بھی حاصل ہوئی ہیں اور ہماری فوج نے جس طرح کی تاریخ ساز جنگ قبائلی علاقوں میں لڑی اس کی مثال پوری دنیا میں کہیں نہیں ملتی ۔ افغانستان کے حوالے سے پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ افغان امن ہمیں بہت عزیز ہے اور اس کے لیے پاکستان نے بہت اہم اقدامات بھی کیے ہیں اور افغانستان میں جاری نیٹو کے حالیہ آپریشن میں امریکا کی جتنی معاونت پاکستان نے کی ہے اور کسی ملک نے نہیں کی، افغان بارڈر مینجمنٹ پر بھی کام جاری ہے اور اب بغیر دستاویزات کے پاکستان میں داخلے کی اجازت نہیں ہوگی، ہم نے افغان مہاجرین کی بڑے اچھے طریقے سے مہمان نوازی کی ہے اس لیے ہمارے اوپر دہشتگردی کے الزامات لگانے والوں کو چاہیے کہ وہ ان مہاجرین کو یہاں سے لے جائیں اور اگر پھر پاکستان سے کوئی دہشت گردی کی کارروائی ہو تو ہم جوابدہ ہیں۔

ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پاکستانی فضائی حدود کی خلاف ورزی کا سدباب کر رہے ہیں اور اس کے تحفظ کے لیے اہم اقدامات بھی کیے جا رہے ہیں تاکہ اپنی فضائی حدود کا تحفظ یقینی بنایا جا سکے، ہم کسی بھی ملک کو پاکستانی حدود کی خلاف ورزی نہیں کرنے دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے ملک میں جمہوریت ایک نوزائیدہ ہے جس کا پوداپروان چڑھ رہا ہے اس لیے ہماری آنے والی نسلیں جمہوریت کے اس تنا آور درخت سے لطف اندوز ہو سکیں گی۔ انہوں نے کہا کہ این اے 110 کے حوالے سے فیصلہ عدالت عظمیٰ میں ہے اور میرا پاکستانی عدالتوں پر بڑا غیر متزلزل ایمان ہے لیکن عمران خان کی میری وکٹ گرانے کی باتوں میں کوئی سچائی نہیں اور میں اپنی مدت پوری کروں گا، یہ کپتان صرف باتیں ہی کر سکتا ہے جس کی نہ تو اب کوئی لائن رہی ہے اور نہ ہی لینتھ دونوں سے فارغ ہو چکا ہے یہی وجہ ہے کہ اب تو اس کے جلسے جلوسوں میں بھی عوام نے آنا چھوڑ دیا ہے کیونکہ لوگ عمران خان کی اصلیت جان چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملکی تاریخ میں پہلی بار وزیراعظم اپوزیشن کو منا کر واپس اسمبلی میں لائے جو ایک اچھی روایت ہے کیونکہ سیاسی قوتوں سے بات چیت ہو سکتی ہے اور پاکستان پیپلز پارٹی تو ایک جمہوری جماعت ہے جس نے جمہوریت کے لیے قربانیاں بھی دی ہیں،ہم نے پاکستان پیپلز پارٹی کے ساتھ مل کر مشرف سے جمہوریت کی جنگ بھی لڑی، ہم ایک سیاسی کارکن ہیں اور سیاست میں دروازے کبھی بند نہیں کیے جاتے۔

مزید : قومی /اہم خبریں


loading...