رشوت اور بد انتظامی پر 12تحصیلدار وں کو سزا ئیں ، 9تاحال سیٹوں پر براجمان

رشوت اور بد انتظامی پر 12تحصیلدار وں کو سزا ئیں ، 9تاحال سیٹوں پر براجمان

 لاہور(عامربٹ سے)محکمہ مال کی جانب سے بد انتظامی ،اختیارا ت سے تجاوز اور رشوت ستانی میں ملوث قصوروار ثابت ہونے والے 12 تحصیلداروں کو سزا سنا دی گئی ، 9 تحصیلداروں کی پانچ سالہ سروس ضبط کرنے جبکہ 3ریٹائرڈ ہونے والے تحصیلداروں کی پینشن کا 50فیصد جرمانہ وصول کیا جائے گا ،5سالہ سروس ضبطگی میں لاہور کی تحصیل کینٹ میں تعینات تحصیلدار سجاد احمد قریشی بھی سرفہرست،جن پر 7لاکھ 10ہزار 942 روپے خورد برد کرنے کا الزام ثابت ہوا ہے ، تحصیلداروں پر 8کروڑ 43لاکھ 18ہزار 669روپے خورد برد کرنے کا الزام تھاجن سے دوران انکوائری 6کروڑ 21لاکھ 61ہزار 257روپے وصول کر لئے گئے ،پیڈا ایکٹ کے تحت کروڑوں روپے کی کرپشن کرنے والے تحصیلداروں کو سروس ضبطگی جیسی معمولی نوعیت کی سزا ادارے کے ساتھ مذاق کے مترادف ہے ، محکمانہ انکوائری میں؂ قصوروار پائے جانے والے تمام تحصیلدار لاہور سمیت دیگر اضلاع میں بطور تحصیلدار اپنی سیٹوں پر براجمان ،سیکرٹری 'سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو جواد رفیق ملک نے سزا پانے والے قصورواروں کے خلاف فوری عمل درآمد کے احکامات جاری کرتے ہوئے متعلقہ اداروں وزیر اعلیٰ ہاؤس اور ڈی سی اوز کو بھی کاپیاں ارسال کر دیں تفصیلات کے مطابق 9 تحصیلداروں سجاد احمد قریشی ،آصف جاوید ورک،ناصر محمود وڑائچ ،سہیل رضوان،نظر حیات بدرانہ ،رائے ظفر عباس،رانا لیاقت علی اور سلطان احمد کو سیکشن (iii)(b)(1)4 پنجاب ایمپلائز ایفیشنسی اور احتساب ایکٹ 2006کے تحت پانچ سالہ سروس ضبط کرنے کے احکامات جاری کئے گئے ہیں اس کے برعکس 3ریٹائرڈ ہونے والے تحصیلداروں سید حسن عسکری ،سید رضوان احمد نقوی اور اللہ دتہ وڑائچ کو ریٹائرہونے کی وجہ سے پینشن کا 50فیصد جرمانہ سول سروس پینشن رولز1963 کے مطابق کٹوتی کرنے کے احکامات جاری کر دیئے ہیں۔لاہور کینٹ میں تعینات تحصیلدار سجاد احمد قریشی نے بھی بہتی گنگا میں ہاتھ دھوئے اور بعد از انکوائری پٹیشن نمبر 16501دائر کی گئی جس میں وزیراعلیٰ کے سیکرٹری کی جانب سے لیٹر نمبر 2011/115632(W)DS/imp/CMS/4-5OT-47 کے تحت آغاز کیا گیا اس وقت کرپشن کنگ ضلع منڈی بہاؤالدین کی تحصیل پھالیہ میں تعینات تھے بعد از انکوائری ان پر 7لاکھ 10ہزار 942روپے خرد برد کرنے کا الزام ثابت ہوا جس میں وہ بد انتظامی ،کرپشن اور اختیارات سے تجاوز کرنے پر قصور وار قرار پائے گئے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1