درجنوں مقامات پر ہائی ٹینشن لائن کے نیچے تعمیرات سے سانحہ کا خدشہ

درجنوں مقامات پر ہائی ٹینشن لائن کے نیچے تعمیرات سے سانحہ کا خدشہ

لاہور (اپنے خبر نگار سے)صوبائی دارلحکومت میں درجنوں مقامات سے بھی زیادہ جگہوں پر ہائی ٹینشن لائن(بجلی کی مین لائن)کے نیچے کمرشل اور رہائشی تعمیرات کر لی گئی ہیں ،جو کہ خلاف قانون ہونے کر ساتھ ساتھ انسانی جانوں کے لئے بھی خطرناک ہے اور اس کی وجہ سے کئی قیمتی جانیں بھی ضائع ہو چکی ہیں ،لیکن ابھی تک نہ تو بنانے والوں کے خلاف کاروائی کی گئی ہے۔ درجنوں مقامات پر ہائی ٹینشن کے نیچے کمرشل اور رہائشی تعمیرات کر لی گئی ہیں ،جو کہ غیر قانونی اور بلڈنگ بائی لاز کی خلاف ورزی ہے ،ذرائع نے بتایا ہے کہ اکثر مقامات پر بنائی گئی ہائی ٹینشن(بجلی کی مین لائن )کے نیچے آنے والی زمین کے مالکان کو ان کی زمین کی ادائیگی نہیں کی گئی اس حوالے سے جب ایل ڈی اے حکام سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا ،کہ تعمیرات سکیم بننے سے پہلے کی ہیں ،بہر حال یہ غیر قانونی ہیں ،محکمہ اب یہ لسٹیں تیار کر رہا ہے کہ کون سی جگہ کی ادائیگی کی گئی ہے اور کس کی ادائیگی نہیں کی گئی ہے ،لسٹیں مکمل ہو نے کا بعد کاروائی عمل میں لائی جا ئے گی

مزید : میٹروپولیٹن 4


loading...