تعلیمی اداروں کی سیکیورٹی کیلئے 50ہزار تربیت یافتہ گارڈ بھرتی کرنے کا فیصلہ،ڈی ای اوز اور ڈی پی اوز سکولوں کے دورے کرینگے

تعلیمی اداروں کی سیکیورٹی کیلئے 50ہزار تربیت یافتہ گارڈ بھرتی کرنے کا ...

لاہور(خبرنگار) بچوں کے اغوا اور پراسرار گمشدگی کے بڑھتے ہوئے واقعات پر تعلیمی اداروں کے اردگرد سیکیورٹی کو سخت اورکومبنگ آپریشن کرنے کے ساتھ ساتھ 50 ہزار سے زائد تربیت یافتہ سیکیورٹی گارڈ بھرتی کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔ اس کے ساتھ نجی تعلیمی اداروں کو بھی سیکیورٹی سخت کرنے کا حکم دے دیا گیا ہے اور اس میں ڈی سی اوز سے سیکیورٹی کلیرنس سرٹیفکیٹ حاصل کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔ وزیر اعلیٰ پنجاب کی جانب سے چیف سیکرٹری، ہوم سیکرٹری اور آئی جی پولیس کو الگ الگ دئیے گئے احکامات میں سکولوں کی سیکیورٹی کے معاملات کو انتہائی سنگینی سے لینے کا ٹاسک دیا گیا ہے جس میں آج سے ڈی سی اوز، ریجنل پولیس افسران اور ڈی پی اوز خود سرکاری و نجی سکولوں کے دورے کریں گے اس میں سکولوں کے اساتذہ، والدین اور بچوں کو لیکچر دیاجائے گا جس میں اس بات کو لازمی قرار دیا جائے گا کہ سکولوں کے ارد گرد مشکوک افراد پر کڑی نظر رکھی جائے۔ سکولوں میں بچوں کو چھوڑنے کے وقت والدین اور عزیز و اقارب کی آڑ میں کہیں کوئی مشکوک آدمی تو نہیں کھڑا ہے، اس کے ساتھ ڈی پی اوز اور ڈی سی اوز سکولوں میں لیکچر دینے کے دوران اس بات پر عملدرآمد کروائیں گے کہ چھٹی کے اوقات کے دوران بچوں کو اساتذہ اور سیکیورٹی گارڈ خود والدین کے حوالے کریں وگرنہ سیکیورٹی گارڈ اور اساتذہ کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ وزیر اعلیٰ کی جانب سے جاری کردہ احکامات میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ ناقص سیکیورٹی کے حامل سرکاری سکولوں کے ہیڈ ماسٹرز، ڈی ای اوز، ڈپٹی ڈی ای اوزاور اے ای اوز کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ اس میں پیڈا ایکٹ کے تحت مقدمات درج کرنے کے ساتھ ساتھ مقدمات بھی درج کیے جائیں گے جبکہ نجی سکول کے مالکان کو سیکیورٹی کلیئرنس کو یقینی بنانے کے لئے ڈی سی اوز سے کلیئرنس سرٹیفکیٹ حاصل کرنے کی شرط لازمی عمل کرنے کا حکم دے دیا گیا ہے اس میں کوتاہی یا عملدرآمد نہ کرنے والے پرائیویٹ سکولوں کو سیل بھی کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔ دوسری جانب وزیر اعلیٰ پنجاب کی جانب سے جاری حکم میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ تعلیمی اداروں میں سیکیورٹی کے معاملات کو فول پروف بنانے کے لئے 50 ہزار سے زائد تربیت یافتہ سیکیورٹی گارڈ بھرتی کئے جائیں گے۔ اس میں سیکرٹری تعلیم عبدالجبار شاہین کو خصوصی طور پر احکامات جاری کر دئیے گئے ہیں۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ تربیت یافتہ سیکیورٹی گارڈ بھرتی کرنے کے لئے اگلے چوبیس گھنٹے کے اندر کارروائی شروع کر دی جائے گی۔ جس میں ریٹائرڈ فوجی یا پھر بھرتی ہونے والے سیکیورٹی گارڈ کو آرمی اور رینجرز کے ٹریننگ سنٹروں سمیت پولیس کے ٹریننگ سنٹروں سے جدید نوعیت کی ٹریننگ دی جائے گی۔ اس حوالے سے سیکرٹری تعلیم عبدالجبار شاہین کا کہنا ہے کہ سکولوں میں 50 ہزار سے زائد سیکیورٹی گارڈ بھرتی کئے جا رہے ہیں جس میں اے پلس، اے کیٹیگریز اور بی کیٹگریز کے سکولوں میں سیکیورٹی کے معاملات کو ٹیک اَپ کیاجائے گا جس کے ساتھ چھٹی کے اوقات میں بچوں کو صرف والدین کے حوالے کیا جائے گا جس کی پولیس افسران، ضلعی افسران اور اساتذہ کی نگرانی میں حوالگی کے حوالے سے عملدرآمد کروایا جائے گا۔

مزید : صفحہ اول