والدین سے بچوں میں منتقل ہونے والی بیماریوں کی روک تھام کیلئے منصوبہ تیار

والدین سے بچوں میں منتقل ہونے والی بیماریوں کی روک تھام کیلئے منصوبہ تیار

لا ہور (جاوید اقبال )والدین سے بچوں میں منتقل ہونے والی بیماریوں کی روک تھام کا پلان تیار کر لیا گیا ہے ،جس کے تحت تھیلیسیمیا ،ہیپا ٹائٹس اور ایڈز کے شادی سے قبل ٹیسٹ ضروری قرار دے دئے گئے ہیں ٹیسٹوں کے بغیر شادی کرنے پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کے لئے 15رکنی کمیٹی قائم کر دی گئی ہے۔یہ کمیٹی قانون سازی کے لئے مسودہ قانون تیار کر کے وزیر اعلیٰ کو پیش کرے گی ۔اس کے لئے وزیر اعلی پنجاب نے شادی سے قبل تھیلیسیمیا سمیت ایسی تمام بیماریوں کے ٹسٹ کروانے کی ہدایت کر دی ہیں جو والدین سے بچوں کو منتقل ہوتی ہیں۔ تفصیلا ت کے مطا بق وزیر اعلی پنجاب نے شادی سے قبل تھیلیسیمیا سمیت ایسی تمام بیماریوں کے ٹسٹ کروانیاور اس پر قانون سازی کرنے کی ہدایت کی ہے۔ذرائع کے مطابق وزیر اعلی پنجاب نے اس قانون سازی کرنے فوری طور پر ایک کمیٹی قائم کی ہے جس کا سربراہ جنید سرفراز کو مقرر کیا گیا ہے۔ اس کمیٹی میں ڈاکٹر سلمان شاہد، شبنم بشیر، پروفیسر شگفتہ خالق، ڈاکٹر شازیہ مقبول، ڈاکٹر شاہدہ مھسن شامل ہیں یہ کمیٹی 15 روز مین وزیر اعلی پنجاب کو اپنی سفارشات پیش کرے گی کہ کس طرح قانون سازی کی جا سکتی ہے اور کس طرح شادی سے قبل تھیلیسیما سمیت دیگر بیماریوں کے ٹسٹ کر کے ان بیماریوں کو بچوں میں منتقل ہونے سے روکا جا سکتا ہے۔ وزیر اعلی پنجاب نے حکم دیا ہے کہ ایسی بیماریوں کی بچون کو منتقلی کی روک تھام کے لئے فوری طور پر قانون سازی کی جائے۔

منصو بہ تیا ر

مزید : صفحہ آخر