خاتون نے پہلے شوہر کی پنشن اور بینک بیلنس ہتھیانے کیلئے بچوں کے جعلی شناختی کارڈ اور برتھ سرٹیفکیٹ بنوا لیے

خاتون نے پہلے شوہر کی پنشن اور بینک بیلنس ہتھیانے کیلئے بچوں کے جعلی شناختی ...

میاں چنوں (نمائندہ پاکستان)اندھیر نگری چوپٹ راج،خاتون نے (بقیہ نمبر15صفحہ12پر )

پنشن اور بنک بیلنس ہتھیانے کیلئے نادرا اور یونین کونسل ملازمین کے ساتھ ساز باز کرکے اپنے بچوں کے دو دو شہروں سے شناختی کارڈ اور برتھ سرٹیفکیٹ بنوالیے تفصیل کے مطابق محمد افضل ولد خوشی محمد سکنہ چک نمبر128/15.Lنے میڈیا کو بتایا کہ میرے بھائی مشتاق احمد ولد خوشی محمد جو کہ آرمی میں ملازم تھے اور 1995 میں رٹائرڈ ہوئے،انھوں نے 1983 میں نسرین اختر دختربشیر احمد سکنہ چیچہ وطنی سے شادی کی،بعض خاندانی وجوہات کی بنا پر ایک سال کے اندر ہی ان کی علیحدگی ہو گئی،نسرین اختر سے ان کی کوئی اولاد نہ ہوئی، اس کے بعد مطلقہ نسرین اختر دختر بشیر احمد نے غلام رسول نامی شخص جو کہ لیہ کا رہائشی تھا سے شادی کر لی،جہاں اس کے بطن سے تقریباً6 بچے پیدا ہوئے،جن کا اندراج پیدائش ضلع لیہ میں ہوا اور ان کے شناختی کارڈ بھی ضلع لیہ سے بنے،لیکن مطلقہ نسرین اختر زوجہ غلام رسول نے میرے بھائی کی پنشن اور بنک بیلنس ہتھیانے کیلئے اپنے دوسرے خاوند غلام رسو ل کے بچوں کو میرے مرحوم بھائی مشتاق احمد کے بچے ظاہر کرکے29/15.Lمیں یونیں کونسل کے سیکرٹری سے ساز باز کرکے یہاں سے بھی تاریخ پیدائش کے لیٹ اندراج کروا کر میاں چنوں سے بھی ان کے شناختی کارڈ بنوائے اورولدیت میرے مرحوم بھا ئی مشتاق احمد کی ظاہر کی گئی،اس طرح قانون کی خلاف ورزی کرکے دو شہروں سے ڈبل ڈبل شناختی کارڈ بنوائے گئے،پھر میرے بھائی کاجعلی ڈیتھ سرٹیفکیٹ بنوا کریکم ستمبر 2014کو عدالت میں جانشینی سرٹیفکیٹ کیلئے دعویٰ دائر کیا،سائل نے چیئر مین نادرا،وزیر اعلیٰ پنجاب، وزیراعظم پاکستان،چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ ،چیف جسٹس آف پا کستان اور دیگر متعلقہ ادارو ں سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر