جنوبی پنجاب میں ڈاکو راج قائم،پولیس نے جینا حرام کردیا،طاہر القادری

جنوبی پنجاب میں ڈاکو راج قائم،پولیس نے جینا حرام کردیا،طاہر القادری

ملتا ن(کا مر س ر پو ر ٹر) پاکستان عوامی تحریک کے قائد ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا ہے کہ ڈکیتیوں کے خلاف احتجاج کرنے پر راجن پور ضلع کے شہر داجل کے ہزاروں شہریوں کا پولیس نے (بقیہ نمبر23صفحہ12پر )

جینا حرام کر دیا ہے ۔کیا حکمران ایک اور سانحہ ماڈل ٹاؤن چاہتے ہیں؟ ان خیالات کا اظہار سربراہ عوامی تحریک نے عوامی تحریک کے رہنماؤں خواجہ عامر فرید کوریجہ اور سردار شاکر مزاری سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ ڈاکو دن دہاڑے ناصرف شہریوں کو لوٹتے ہیں بلکہ مزاحمت پر قتل بھی کر دیتے ہیں ۔پورے جنوبی پنجاب میں ڈاکو راج قائم ہو چکا ہے۔ شام کے بعد سڑکیں سنسان ہو جاتی ہیں۔وزیراعلیٰ پنجاب کے سابق حلقہ کے عوام نے ڈاکوؤں کے خلاف احتجاج کر کے کون سا جرم کیا ہے کہ سینکڑوں شہریوں کے خلاف سنگین دفعات کے تحت مقدمات درج کر لیے گئے ۔انہوں نے کہا کہ جنوبی پنجاب کے عوام کے ساتھ ظلم و بربریت کا سلسلہ بند کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ راجن پور پولیس چھوٹو گینگ کے سامنے بھیگی بلی بن جاتی ہے۔انہوں نے کہا کہ پولیس صرف سانحہ ماڈل ٹاؤن جیسے خون خرابے اور معصوم شہریوں کو تنگ کرنے کی فورس بن کر رہ گئی ہے ۔پنجاب کے 10کروڑ شہری اپنے خون پسینے کی کمائی کے ٹیکسوں سے اپنی حفاظت کیلئے پولیس ڈیپارٹمنٹ کو ہر سال 100راب روپے دئیے جاتے ہیں مگر افسوس عوام کے ٹیکسوں سے تنخواہیں لینے والے اور لگژری گاڑیاں استعمال کرنے والے افسران عوام کو تحفظ دینے کی بجائے ان کیلئے تکلیف کا باعث بنے ہوئے ہیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...