ڈویژنل پبلک سکول کی فیسوں میں اضافہ، والدین کا احتجاج

ڈویژنل پبلک سکول کی فیسوں میں اضافہ، والدین کا احتجاج

جہانیاں (نامہ نگار )ڈویژنل پبلک سکول میں پڑھنے والے بچوں کے والدین ،محمد اشرف ، عبدالحفیظ ، شیخ شان ،اشفاق احمد ،رو ف احمد ،ماجد داود،عباس سندھو، چوہدری منور ودیگر نے جہانیاں پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتا یا کہ ڈویژنل پبلک سکول جو کہ ضلعی حکومت کے زیر (بقیہ نمبر9صفحہ12پر )

(بقیہ نمبر1صفحہ12پر )نگرانی ہے ،کی فیسوں میں 200روپے فی بچہ اضافہ کر دیا گیا ہے ،جبکہ پنجاب حکومت کے واضع احکامات ہیں کہ کوئی پرائیویٹ یا نیم سرکاری سکول فیسوں میں بغیر اجازت اضافہ نہیں کرے گا۔لیکن ڈی سی او خانیوال کی اجازت کے بعد پرنسپل میڈم سعدیہ کاشف نے فیسوں میں 200روپے اضافہ کر کے ووچر بھجوا دئیے ہیں انھوں نے کہا کہ ڈویژنل پبلک سکول کی فیسوں میں پچھلے سال بھی اضافہ کیا گیا جبکہ تعلیمی معیار اور اساتذہ کے اخلاقیات میں کوئی بہتری نہیں لائی گئی ۔ ان کا کہنا تھا کہ خاتون پرنسپل ہونے کی وجہ اکثر معاملات پر ان کی گرفت نہیںیہی وجہ ہے کہ سکول میں گزشتہ سال والدین اور اساتذہ کے درمیان بدکلامی کے متعددواقعات ہوئے ہیں اورڈویژنل پبلک سکول میں کئی سال سے تعینات ایڈمنز ادارے کو دیمک کی طرح چاٹ رہے ہیں ،انھوں نے گورنمنٹ ماڈل ہائی سکول کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ڈویژنل پبلک سکول کی نسبت فری تعلیم دینے والایہ گورنمنٹ ہائی سکول پچھلے کئی سال سے بہتر رزلٹ دے رہا ہے ،اگر سکول انتظامیہ نے اپنی روش تبدیل نہ کی تو اسکول کے سامنے احتجاج کرنے پر مجبور ہوں گے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...