وزیر اعلٰی کی بس ریپڈٹرانزٹ منصوبے کو ریڈو ر پر مختلف سٹیشنز کے قیام کیلئے جگہوں کی نشاندہی کی ہدایت

وزیر اعلٰی کی بس ریپڈٹرانزٹ منصوبے کو ریڈو ر پر مختلف سٹیشنز کے قیام کیلئے ...

 پشاور( پاکستان نیوز)وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے بس ریپڈ ٹرانزٹ منصوبے کے کوریڈور پر مختلف سٹیشنز کے قیام کیلئے جگہوں کی نشاندہی کرنے اور منصوبے کی تعمیر کے دوران ٹریفک کی روانی کو برقرار رکھنے کیلئے متبادل راستوں کا انتظام کرنے کی ہدایت کی ہے۔ وزیراعلیٰ نے منصوبے کے تناظر میں انڈر پاسوں، اوورہیڈ پلوں اور سٹرکوں کو کشادہ کرنے کا بھی حکم دیا ہے اور کہا ہے کہ کشادگی کے عمل میں زمین کی کمرشل بنیادوں پر منصوبہ بندی بھی ضروری ہے۔ وہ وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ پشاورمیں اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ وزیراعلیٰ کے معاون خصوصی برائے ٹرانسپورٹ ملک شاہ محمد وزیر ، سٹرٹیجک سپورٹ یونٹ کے سربراہ صاحبزادہ سعید، متعلقہ محکموں کے انتظامی سیکرٹریوں اوراعلیٰ حکام نے اجلاس میں شرکت کی ۔ وزیراعلیٰ نے کمشنر پشاور ، سیکرٹریز ٹرانسپورٹ، لوکل گورنمنٹ اور ڈی جی پی ڈی اے کو ہدایت کی کہ وہ ریپڈ بس ٹرانزٹ کے مجوزہ روٹ کا وزٹ کرکے سٹیشنز کے لئے مناسب مقامات کا تعین کریں۔ انہوں نے کہاکہ سٹیشنز میں کشادہ انتظار گاہ سمیت دیگر سہولیات کو مدنظر رکھا جائے ۔ وزیراعلیٰ نے منصوبے کے تناظر میں ضرورت کی بنیاد پراضافی لین تیار کرنے اور سڑکوں کی تعمیر ومرمت کو ایک ماہ کے اند ر مکمل کرنے کا حکم دیا ہے۔ انہوں نے واضح کیا کہ اس سال کے آخر تک کوریڈور پر کام شروع ہو گا لہٰذا اس سے پہلے تمام انتظامات مکمل ہونے چاہئیں تاکہ ٹریفک کے نظام میں کوئی رکاوٹ نہ آئے۔ انہوں نے کہاکہ کوہاٹ روڈ بائی پاس کی تعمیر سے ٹریفک کا بہاؤ تقسیم کرنے میں مدد ملے گی ۔ انہوں نے اس منصوبے کو بروقت مکمل کرنے کا حکم دیا ۔وزیراعلیٰ نے کہاکہ رپیڈ بس ٹرانزٹ منصوبہ پشاور کی گنجان ٹریفک کے مسائل کا مستقل حل ہے۔ لہٰذا مستقبل کی ضروریات کو مدنظر رکھتے ہوئے منصوبے کی تکمیل یقینی بنائی جائے گی ۔ پرویز خٹک نے پشاور کی مجموعی خوبصورتی کے پلان کو تیز ترین ٹریک پر ڈال کربروقت مکمل کرنے کی ہدایت کی۔ انہوں نے کہاکہ پشاور میں صفائی اور گندگی کو ٹھکانے لگانے کا عمل کل وقتی ہونا چاہیئے اور اس پورے عمل کی کل وقتی نگرانی کرنے کی ہدایت کی۔ پشاور کی عظمت رفتہ کی بحالی، اندرون شہرسڑکوں کی تعمیر و مرمت اور معیاری کام کو یقینی بنانے کا حکم دیا۔ انہوں نے کہا کہ ادارے کے ذمے لگائی گئی ذمہ دارویوں کو پورا کرنا ہو گا وقت اور وسائل کا ضیاع نا قابل قبول ہے۔ ہم عوامی خدمات کا معیار مقرر کر چکے ہیں اور یہ معیار تعمیراتی کاموں سمیت سماجی خدمات کے شعبوں میں نظر آنا چا ہیئے۔

پشاور( پاکستان نیوز)وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے خواتین کیڈٹ کا لج مردان اور جیل پارک مردان کے قیام کے لئے منتخب کی گئی سائٹس سے اتفاق کیا ہے اور متعلقہ حکام کو ہدایت کی ہے کہ منصوبوں کی تعمیر پر عملی کام بروقت شروع کرنے کے لئے تمام انتظامات کو حتمی شکل دی جائے ۔ صوبے کے ہائیر سیکنڈری سکولوں کی سٹینڈرائزیشن کے منصوبے کو دسمبر2017 تک مکمل کرنے کی بھی ہدایت کی اور کہاہے کہ متعلقہ حکام وسائل کے عوامی مفاد میں شفاف استعمال اور منصوبوں کی معیاری تکمیل یقینی بنائیں کیونکہ وہ اس سلسلے میں عوام کے سامنے جوابدہ ہیں ۔ وہ وزیراعلیٰ ہاؤس پشاور میں اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ صوبائی وزیر برائے تعلیم و توانائی محمد عاطف خان، ضلع مردان کے اراکین صوبائی اسمبلی، کمشنر مردان ،متعلقہ محکموں کے انتظامی سیکرٹریوں ، وائس چانسلر ویمن یونیورسٹی مردان اور دیگر متعلقہ حکام نے اجلاس میں شرکت کی ۔ وزیراعلیٰ پرویز خٹک نے متعلقہ محکموں سے مردان میں جاری میگا منصوبوں پر عملی پیش رفت طلب کی۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ ویمن یونیورسٹی مردان کیلئے عملہ ہائر کرنے اور ایڈ مشن کا عمل شروع کر دیا گیا ہے جبکہ جیل پارک مردان کی جگہ کو جوڈیشل کمپلیکس کی سائٹ سے تبدیل کرنے کے سلسلے میں ہائی کورٹ کے متعلقہ حکام سے بات کر لی گئی ہے جس پر انہوں نے رضامندی کا اظہار کیا ہے۔ وزیراعلیٰ نے اس سلسلے میں سمری جلد پہنچانے اور ضرورت کے مطابق ڈیزائن میں تبدیلی کرنے کا حکم دیا ہے۔ وزیراعلیٰ نے امیر محمد خان پارک مردان کیلئے منتخب اراضی کو لیز پر لینے کیلئے فوری طور پر متعلقہ محکمے سے بات کرنے اور سائٹ کا جائزہ لیکر سمری بھیجنے کا حکم دیا ہے۔ انہوں نے مردان ماڈل سکول کی تعمیر پر بھی کام کی رفتار تیز کرنے کا حکم دیا ۔متعلقہ حکام نے بتایا کہ مذکورہ سکول کی تعمیر پر کام گزشتہ دو ماہ سے شروع ہے جسے ایک سال کے اندر مکمل کرلیا جائے گا ۔ وزیراعلیٰ نے واٹر سپلائی اینڈ سینٹیشن کمپنی مردان کے فنڈز کیلئے سمری بھیجنے کا حکم دیا ۔ انہوں نے مقامی حکومتوں کو جاری کردہ بجٹ میں صفائی کیلئے مختص فنڈز کے سست استعمال پر برہمی کا اظہار کیا اور حکم دیا کہ حکام حکومتی فیصلوں پر عمل درآمد یقینی بنائیں۔ انہوں نے ویسٹ ٹو انرجی منصوبوں کو آؤٹ سورس کرنے کی بھی ہدایت کی ۔مردان میں ریسکیو1122 کے دو سٹیشنز کے قیام کیلئے ڈپٹی کمشنر مردان کو ہدایت کی کہ وہ ریسکیو1122 کے حکام سے مل کر فوری طور پرسائٹس فائنل کریں ۔ مزید برآں اجلاس کو بتایا گیا کہ ہائرسیکنڈری سکولوں کی سٹینڈرائزیشن کے پہلے مرحلے میں 61 سکیمیں منظور ہوئیں جن میں سے 8پرکام جاری ہے جبکہ اگلے سال کے آخر تک منصوبے کی تکمیل یقینی بنائی جائے گی ۔ وزیراعلیٰ نے کہاکہ جن سکولوں میں جگہ کم ہووہاں دوسری منزل کی تعمیر کیلئے ڈیزائن تیار کرکے پندرہ دنوں کے اندر پیش کیا جائے۔ وزیراعلیٰ نے ضلع اور تحصیل کی سطح پر بجٹ کا پانچ فیصد متعلقہ علاقے کی خوبصورتی کیلئے خرچ کرنے کے حکومتی فیصلے پر عمل درآمد کرنے کا حکم دیا۔

پشاور( پاکستان نیوز)وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے صوبے میں جاری ترقیاتی سکیموں کیلئے مختص فنڈز جو تا حال استعمال نہ ہو سکے، کی بحالی کی اُصولی منظوری دیدی ہے۔ انہوں نے ہدایت کی کہ سماجی خدمات کے شعبوں میں جاری سکیمیں ترجیحی بنیادوں پر مکمل کی جائیں ۔ وہ وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ پشاور میں اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ محکمہ بلدیات ، خزانہ اور منصوبہ بندی و ترقیات کے انتظامی سیکرٹریوں اور اعلیٰ حکام نے اجلاس میں شرکت۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ صوبے کے تمام اضلاع میں یکساں ترقیاتی حکمت عملی جاری رہے گی ۔ پچھلے سال کی جاری سکیموں کی تکمیل میں وسائل کی کمی کو آڑے نہیں آنے دیں گے۔ وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ ترقی کا پہیہ نہیں رکنا چاہیئے۔ عوام کی خوشحالی، ترقی اور خدمات تک آسان رسائی موجودہ حکومت کا عزم ہے اس مقصد کی تکمیل میں نہ پہلے کوئی رکاوٹ آنے دی اور نہ آئندہ برداشت کریں گے۔ان ترقیاتی سکیموں سے عوام کے مفادات وابستہ ہیں۔ حکومت کی ذمہ داری ہے کہ عوام کی ضروریات کے مطابق ان کی توقعات پر پورا اُترے ۔ وزیراعلیٰ نے کہاکہ حکومتی وسائل عوام کی امانت ہیں اور ہم اس امر کو یقینی بنائیں گے کہ وسائل عوام کی فلاح و بہبود کی سکیموں پر خرچ ہوں۔انہوں نے تمام ڈپٹی کمشنرز کو ہدایت کی کہ وہ اپنے اپنے اضلاع میں ترقیاتی حکمت عملی کے تحت پچھلے سال کی مختص شدہ رقم کیلئے فوری طور پر مجوزہ طریقہ کار مکمل کریں تاکہ قانون کے مطابق اضلاع میں ترقیاتی حکمت عملی جاری رکھی جا سکے ۔

مزید : کراچی صفحہ اول