خیبر پختونخوا اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے محکمہ آبپاشی کا اجلاس

خیبر پختونخوا اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے محکمہ آبپاشی کا اجلاس

پشاور( پاکستان نیوز)خیبر پختونخوا اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے محکمہ آبپاشی کا ایک اجلاس کمیٹی کے چےئرمین و ایم پی اے مفتی سید جانان کی زیر صدارت اسمبلی سیکرٹریٹ پشاور میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں کمیٹی کے ممبران و اراکین اسمبلی عارف احمدزئی ، زرین گل کے علاوہ ایم پی اے محمد علی شاہ بطور محرک شامل تھے۔اس موقع پر محکمہ آبپاشی ،محکمہ قانون، محکمہ خزانہ، ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل اور دیگر متعلقہ حکام نے بھی اجلاس میں شرکت کی۔اجلاس میں محکمہ آ بپاشی سے متعلق مختلف امور پر تفصیلی بحث کی گئی اور اس ضمن میں کئی اہم فیصلے بھی کئے گئے۔محکمہ آبپاشی کے حکام نے اجلاس کے شرکاء کو محمد علی شاہ کے توجہ دلاؤ نوٹس جس میں محکمہ آبپاشی ملاکنڈ ڈویژن میں کلاس فور کی 20آسامیوں پر میرٹ اور قواعد و ضوابط کے برعکس اقرباء پروری کی بنیاد پر بھرتیاں کرنے سے متعلق تفصیلی طور پر آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ مذکورہ بھرتیاں حکومت خیبر پختونخوا کی تقررکردہ محکما نہ تعیناتی کمیٹی جو کہ مجازآفسیر (ایکسین ملاکنڈ ایریگیشن ڈویژن)، سیکشن آفیسر محکمہ آپباشی ، سب ڈویژنل آفیسر اور متعلقہ ہیڈ کلرک بحیثیت ممبر اور سیکرٹری پر مشتمل تھی کی سفارش پر مقامی امیدواروں سے کی گئیں جو کہ متعلقہ ایمپلائمنٹ ایکسچینج کے ساتھ رجسٹرڈ تھے۔کمیٹی کو مزید بتایا گیا کہ محکمہ آبپاشی نے مذکورہ بھرتیوں کی انکوائری محکمے کے اچھی شہرت کے حامل گریڈ19 کے سپرنٹنڈنگ انجینئرسے بھی کرائی جنہوں نے اپنی رپورٹ میں کلاس فور کی بھرتیوں کو میرٹ اور قواعد و ضوابط کے مطابق قرار دیا تھا۔کمیٹی نے محکمانہ انکوائری پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے فیصلہ کیا کہ محکمہ آبپاشی ملاکنڈ ڈویژن میں بھرتیوں کی مکمل تحقیقات کی جائیں گی چونکہ اس سلسلے میں کافی عوامی شکایات موصول ہوئی ہیں۔کمیٹی نے ایم پی اے زرین گل کی سربراہی میں دو ممبران اسمبلی اور محکمہ آبپاشی کے ڈپٹی سیکرٹری پر مشتمل ایک انکوئری کمیٹی تشکیل دی جو پندرہ دن کے اندر اس معاملے کی مکمل تحقیقات کرکے قائمہ کمیٹی کو اپنی انکوائری رپورٹ پیش کرے گی۔

مزید : کراچی صفحہ اول